اورنج لائن منصوبہ ، ملتان روڈ بدترین ٹریفک مسائل کا شکار

اورنج لائن منصوبہ ، ملتان روڈ بدترین ٹریفک مسائل کا شکار

لاہور(اپنے نمائندے سے)اورنج لائن منصوبے کے دوران ایل ڈی اے اور متعلقہ اداروں کی عدم دلچسپی کے باعث صوبائی دارلحکومت کا ملتان روڈ ٹریفک کے بدترین مسائل کا شکار ہو گیا ،گہرے کھڈوں اور تعمیراتی کام کے دوران بننے والے نا ہموار رراستوں سے گزرنے والی گاڑیاں کھٹاراں بن گئیں ،گرین بیلٹ پر کھڑا بارش کا پانی جوہڑ کا منظر پیش کرنے لگا جبکہ ملتان روڈ پر جگہ جگہ ادھڑنے والی سڑک کی بدحالی تاجروں کے لئے مالی خسارے کا سبب بن گئی ،روزنامہ پاکستان کی جانب سے کئے جانے والے سروے کے دوران شہریوں کی کثیر تعداد نے کہا کہ منی پاکستان کراچی کے بعد ملک کا دوسرا بڑا شہر لاہور ترقیاتی کاموں کے سبب بدترین مسائل کا شکار ہورہاہے۔ میٹروٹرین بس سسروس کے بعد اب اورنج ٹرین منصوبے کے باعث سڑکوں کی ٹوٹ پھوٹ تجاوزات غیر ضروری کراسنگز،ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی اورانتظامیہ کی ناقص حکمت عملی کے باعث ٹریفک کے مسائل کے ساتھ گرد وغبار کی وجہ سے لوگ سانس اور گلے کی بیماریوں میں مبتلاء ہو رہے ہیں ، اورنج لائن ٹرین منصوبے کی تکمیل کے دوران سڑکوں کی اکھاڑ بچھاڑ کے سبب صوبائی دارالحکومت کی اہم شاہراؤں مال روڈ، فیروڈ پوروڈ اور ملتان روڈ پر منتقل ہونے والی ٹریفک رواں رکھنا سٹی ٹریفک پولیس کیلئے چیلنج بن گیا ہے۔ اس حوالے سے جائزہ لیاجائے تو ملتان روڈ ہمارے سامنے آتی ہے شہرکے علاقے چوبرجی تا ٹھوکرتک یہ سڑک دونوں اطراف سے خستہ حالی کا شکار ہے اورنج لائن ٹرین منصوبے کے باعث اس سڑک کی ٹوٹ پھوٹ سے علامہ اقبال ٹاؤن، قاضی ٹاؤن، اعوا ن ٹاؤن، علی حسن ٹاؤن، سبزہ زار،ڈھولنوال،گلشن راوی، نواں کوٹ، سمن آباد اوررستم پارک کے رہائشیوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ مین بلیوارڈ علامہ اقبال ٹاؤن کی تعمیر سے ملتان روڈ پر ٹریفک کادباؤ مزید بڑھ گیا ہے۔ موڑ سمن آباد، یتیم خانہ چوک، سکیم موڑ، ملتان چونگی اور ٹھوکر نیاز بیگ پردن میں کئی کئی مرتبہ بدترین ٹریفک جام رہتی ہے۔ ٹریفک کے مسئلے کو لیکر سٹاپ پر قائم گاڑیوں کی ورکشاپس گرینڈ بیٹری سٹاپ پر گاڑیوں کے شورومز، سکیم موڑ پر قائم فروٹ کی دکانوں اور اینٹوں کی ٹرالیوں نے راہ گیروں کیلئے مزید دشواریاں پیدا کردی ہیں۔شہری محمد علی ،قاسم رضا،علی مرتضی اور محمد سجاد نے کہا کہ میٹروٹرین منصوبہ بلا شبہ ایک احسن اقدام ہے لیکن اس سے ملتان روڈ پر قائم دکانوں کے تاجروں کو سڑک کی بدحالی کے باعث زبردست مالی خسارے کاسامنا بھی ہے۔ شدید بارش کی صورت میں راہ گیروں کو ایک اور بڑے مسئلے کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ سڑک کی خستہ خالی کے باعث سیوریج سسٹم بھی شکست دریخت ہوچکا ہے جس کی وجہ سے مہران بلاک علامہ اقبال ٹاؤن کی گرین بیلٹ بارش کے بعد جوہڑ کا منظر پیش کرتی ہے۔ روزانہ لاکھوں گاڑیوں کا بوجھ اٹھانے والی اس سڑک سے فی الحال صوبائی وضلعی حکومت روڈ سے گزرنے والی پبلک ٹرانسپورٹ اور ویگنیں دن بدن کھٹارا بنتی جارہی ہیں۔ اس پر چلنے والے والی متعد د ویگنیوں کے مالکان نے روٹ تبدیل کرلیے ہیں جبکہ مقامی ٹرانسپورٹ کمپنی نے بھی اسی وجہ سے اس روڈ پر اپنی بسیں چلانا بند کردی ہیں۔ روڈ سے ملحقہ علاقوں کے رہائشی اور تاجر جگہ جگہ ادھیڑے جانے والی ملتان روڈ کے ازسر نو تعمیر کے منتظر ہیں،ایل ڈی اے کے ترجمان نے کہا ہے کہ اورنج ٹرین منصوبے کے باعث شہریوں کو جن مشکلات کا سامنا ہے اس کے تدارک کے لئے حتی المکان کوشش کررہے ہیں امید ہے کہ منصوبے کی تکمیل کے ساتھ ساتھ یہ مسائل بھی کم ہو جائیں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1