عمران خان ایک ہسپتال کو ایڈ منسٹریٹر کی طرح چلا سکتے ہیں ملک کو نہیں : فیصل میر

عمران خان ایک ہسپتال کو ایڈ منسٹریٹر کی طرح چلا سکتے ہیں ملک کو نہیں : فیصل ...

لاہور(نمائندہ خصوصی)پاکستان پیپلز پارٹی کے لاہور کے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120کے نامزد امیدوار فیصل میر نے کہا ہے کہ عمران خان نے خود یہ بیان’’ کہ اچھا ہے کہ میری وفاق میں حکومت نہیں تھی‘‘ دیکر تسلیم کر لیا ہے کہ وہ صرف ایک ہسپتا ل کو ایک اچھے ایڈمنسٹریٹر کی طرح تو چلا سکتے ہیں لیکن ملک کی بھاگ ڈور سھنبالنا ان کے بس کی بات نہیں ہے وہ کبھی بھی ایک اچھے سیاست دان نہیں بن سکتے ان کے ساتھ جو دیگر عہدیدرار موجود ہیں جن میں شاہ محمود قریشی‘ چودھری سرور ‘ صمصمام بخاری اور خود میرے مقابلے کی امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد بھی پیپلز پارٹی کی پیدوار ہیں جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ پیپلز پارٹی سیاسی کارکنوں کے لئے ایک یونیورسٹی کا درجہ رکھتی ہے ‘ میری رٹ کے نتیجے میں بیگم کلثوم نواز بھی جلد ہی نااہل ہونے والی ہیں اور مجھے یقین ہے کہ میرے مقابلے میں بیگم کلثوم نواز کے بھانجھے حافظ نعمان ہی لیپ ٹاپ کے نشان پر الیکشن لڑیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اپنی ڈور ٹو ڈور مہم کے دوران حلقہ کے ووٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر فیصل میر نے حلقہ کے ووٹرز کو پیپلز پارٹی کے رنگ والے مفلرز اور پمفلٹ بھی تقسیم کئے اور حلقہ کے ووٹرز نے فیصل میر کو یقین دلایا کہ وہ بلاول بھٹو کو ہی ووٹ دیں گے۔فیصل میر کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کبھی بھی اچھے سیاست دان نہیں بن سکتے انہوں نے قدم قدم پر ثابت کیا ہے کہ وہ سیاست دان نہیں بلکہ ایک ہسپتال چلانے والے ایک ایڈمنسٹریٹر ہیں ان کے وزیر اعلی پرویز خٹک نے اپنے صوبے کا بیڑہ غرق کردیا ہے وہ بتائیں کہ لاکھوں درخت لگانے کا ان کا منصوبہ کہاں گیا ہے اور انہوں نے اپنے صوبے میں جو نام نہاد تبدیلی لانے کی کوشش کی ہے اس کے بارے میں بھی وہ قوم کو خود ہی بتا دیں ۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اس حلقہ کے ووٹرز کو چاہئے کہ وہ عمران خان کے اس اعترافی بیان کے بعد اب پیپلز پارٹی کوووٹ دیں جس کی لیڈر شپ میں ملک چلانے کی تمام تر صلاحیت موجود ہے اور یہی لیڈر شپ ہے کہ جس کی طرف امت مسلمہ کی لیڈر شپ بھی دیکھ رہی ہے۔فیصل میر کا مزید کہنا تھا کہ مجھے یقین ہے کہ میری رٹ کے نتیجے میں ہائی کورٹ کا ٹریبونل متعلقہ قومی اداروں سے بیگم کلثوم نواز کی سٹیٹمنٹ مانگے گا جس سے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا اور یہ بات ثابت ہو جائے گی کہ بیگم کلثوم نواز جیسی ملکہ عالیہ جن کے بچوں کی دنیا بھر میں اربوں کھربوں روپے کی جائیدایدیں ہیں اوروہ اپنے کاغذات نامزدگی میں جھوٹ بول رہی ہیں کہ وہ صرف ایک لاکھ روپے کے زیوارت کی مالکہ ہیں اور صرف دو کروڑ روپے کے اثاثہ جات کی وہ مالک ہیں اور ان کے شوہر کی کہیں بھی اور کوئی جائیداد نہیں ہے جب ان سب کے بارے میں قومی ادارے ان کی جائیداد کی تفصیلات بتائیں گے تو ان کو نااہلی سے بچانے کے لئے دنیا کی کوئی بھی طاقت نہیں روک سکے گی بیگم کلثوم نواز کی نااہلی لکھی جا چکی ہے ان کے کاغذات نامزدگی میں جگہ جگہ بولے گئے جھوٹ ہی ان کو لیکر بیٹھ جائیں گے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1