اردو سائنس ایوارڈ کااجراء

اردو سائنس ایوارڈ کااجراء

ذوالفقار علی

سائنسی علوم کے فروغ اورلکھاریوں کی حوصلہ افزائی کے لیے اردو سائنس بورڈ کا شاندارپروگرام

ڈاکٹر عاصم بخشی کی’’نئی زمینوں کی تلاش‘‘بہترین کتاب قراردی گئی

بہترین سائنسی کتاب پر مصنف کو 50ہزار روپے انعام دیاجائے گا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

بلاشبہ کتاب علم، معرفت اورخداشناسی وخودبینی کا بہترین ذریعہ ہے۔قوموں اورمعاشروں کی زندگی کاعمل کتاب سے جڑاہواہے۔زندہ قومیں کتابوں کو اہمیت دیتی ہیں، کتابوں سے تعلق توڑنے والی قومیں پیچھے رہ جاتی ہیں۔کتاب اورعلم سے مضبوط رشتہ قوموں کو معراج تک پہنچاتاہے۔ معاشرے میں اچھی ، معیاری اورکارآمدکتاب کی تخلیق، اشاعت اورمطالعے کاعمل رک جائے توزندگی کا عمل ہی رک جانے کے مترادف ہے۔ کتاب صرف انفرادی شخصیت سازی کاہی بہترین ذریعہ نہیں ہے بلکہ یہ قوموں کے عروج وزوال کا مظہر بھی ہوتی ہے۔انٹرنیٹ، الیکٹرانک میڈیا، موبائل فون بالخصوص سوشل میڈیاکے بڑھتے ہوئے استعمال، کمرشلائزیشن، کم شرح خواندگی، لوگوں کی قوت خرید میں کمی، لائبریریوں کے فقدان ، موجود لائبریریوں میں جدید سہولیات کی عدم دستیابی اوروالدین اوراساتذہ کی طرف سے طلبا کو صرف درسی کتب اورنوٹس تک محدود رکھنے کی ترغیب سے ہمارے ہاں کتب بینی کارجحان مسلسل کم ہورہاہے۔ کتب بینی میں کمی کی ایک بڑی وجہ معیاری اورمفید کتابوں کافقدان بھی ہے۔ اچھی کتابیں خاص طور پر اردو زبان میں لکھنے والوں اورمترجمین کی شدید کمی ہے۔اردوسائنس بورڈنے کتاب سے قاری کا رشتہ استوار کرنے اورکتب بینی کے فروغ کے لیے نئے موضوعات پر کتابوں کی اشاعت، موبائل بک شاپ کے اجرا، مصنفین و مترجمین کے معاوضوں میں خاطر خواہ اضافہ، ماہانہ لیکچرز اوراردو سائنس کتاب گھر کے قیام سمیت کئی اہم اقدامات کیے ہیں۔ ڈائریکٹر جنرل اردو سائنس بورڈ ڈاکٹر ناصر عباس نیّر نے سائنسی علوم کے فروغ اورلکھاریوں کی حوصلہ افزائی کے لیے اردو سائنس ایوارڈکا شاندار منصوبہ پیش کیا۔ اس سلسلے میں اردو سائنس بورڈ نے اخبارات میں اشتہار کے ذریعے ملک بھر سے سائنسی کتب کے مصنفین اورمترجمین سے مقابلہ کے لیے مسودات طلب کیے تھے اوربورڈ کو ملک کے طول وعرض سے بڑی تعداد میں مختلف موضوعات پر مسودات موصول ہوئے۔ اردو سائنس ایوارڈ کے لیے ان میں سے بہترین کتاب کے انتخاب کے لیے بورڈ نے نامور مصنفین ، ماہرین اورسکالرزپر مشتمل ججز کی ایک کمیٹی تشکیل دی۔کمیٹی نے ان مسودات کاتفصیلی جائزہ لیا اور راولپنڈی سے تعلق رکھنے والے استاد ڈاکٹر عاصم دلاور بخشی کی ’’نئی زمینوں کی تلاش‘‘کو اردو سائنس ایوارڈ کے لیے بہترین کتاب قرار دیا۔ڈاکٹر عاصم بخشی کو بورڈ کی طرف سے 50ہزار روپے نقدانعام،سر ٹیفکیٹ اورشیلڈ دی جائے گی اورکتاب جلد شائع کی جائے گی۔بورڈ جائزہ کمیٹی کی سفارشات کے مطا بق موصول ہونے والے د یگر مسودات کی بھی اشاعت کا اہتمام کرے گا۔اسی طرز پر اردو سائنس بورڈ بچوں کے ادب کے حوالے سے بھی جلد ایوارڈ کا اجراکے لیے منصوبہ تیار کررہاہے۔ بورڈ کے ان اقدامات سے نہ صرف اچھے مصنفین اورمترجمین کی حوصلہ افزائی ہوگی بلکہ نئے اورنوجوان لکھاریوں اورمترجمین کی تلاش کے ساتھ ساتھ کتب بینی اورکتاب دوستی کے فروغ میں بھی مددملے گی۔

***

مزید : ایڈیشن 2