سعودی عرب ‘ ایران کی قربت کے دعوے مضحکہ خیز ہیں: سعودی وزیرخارجہ

سعودی عرب ‘ ایران کی قربت کے دعوے مضحکہ خیز ہیں: سعودی وزیرخارجہ

جدہ (محمد اکرم اسد) سعودی عرب اور ایران کے درمیان قربت کے دعوے مضحکہ خیز ہیں۔ ایران خطے میں عدم استحکام پیدا کررہا ہے، وہ حزب اللہ اور دہشتگرد تنظیموں کو خلفشار پید اکرنے کے لئے استعمال کرتا ہے۔ ایران سعودی عرب کے ساتھ تعلقات کی بحالی چاہتا ہے تو اسے چاہیے کہ دہشتگردی سے رک جائے اور پڑوسیوں کے اندرونی معاملات میں مداخلت سے باز آجائے۔ ان خیالات کا اظہار سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے العربیہ نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ القاعدہ کے سرکردہ افراد سعودی عرب میں تخریبی کارروائیوں کے پیچھے ہیں، مذاکرات اور سفارتی تعلقات کی بحالی اور تعاون کے ؟؟؟ میں ایران کی طرف سے کوئی سنجیدہ اقدام نہیں اٹھایا گیا۔ یمن کے حوالے سے سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ یمن کی جنگ کی راہ ہم نے نہیں چنی بلکہ اسے اختیار کرنے پر مجبور کیا گیا۔ صفا ائیرپورٹ کھولنے میں ہمیں کوئی اعتراض نہیں بشرطیکہ اقوام متحدہ اس کا انتظام سنبھالے۔ قطر کا ذکر کرتے ہوئے عادل الجبیر نے کہا کہ قطر کے ساتھ بحران اگر 2 سال بھی جاری رہا تو اس کے لئے تیار ہیں۔ بحران طول پکڑگیا تو انسداد دہشتگردی کے علمبردار ممالک کو کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ قطری عوام ہی اپنے حکمران کے مستقبل کے بارے میں فیصلہ کرنے کے مجاز نہیں۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ خلیجی بحران اور قطر کے حوالے سے برطانیہ کا موقف غیر جانبداری پر مبنی ہے۔ برطانیہ نے دوحہ کے موقف کی تائید نہیں کی۔

مزید : صفحہ آخر