لاہور میں طوفانی بارش، چھتیں، دیواریں گرنے، کرنٹ لگنے سے 3کمسن بچے، ایک خاتون جاں بحق

لاہور میں طوفانی بارش، چھتیں، دیواریں گرنے، کرنٹ لگنے سے 3کمسن بچے، ایک ...

لاہور(خبرنگار، کامرس رپورٹر)صوبائی دارالحکومت میں بارش کے باعث بوسیدہ گھروں کی چھتیں، دیواریں گرنے اور کرنٹ لگنے سے تین کم سن بچوں اور ایک خاتون سمیت 4افراد جاں بحق اور دو کم سن بچوں سمیت 11 افراد شدید زخمی ہو گئے۔ تینوں واقعات پر گھروں میں صف ماتم بچھ گئیں۔ تفصیلات کے مطابق چوہنگ کے علاقہ شیر شاہ گاؤں میں بارش کے دوران ایک بوسیدہ گھر کی چھت گر گئی جس کے باعث گھر کی چھت اور دیوار کے ملبے تلے 35 سالہ شازیہ دو کم سن بچوں شہزاد اور آسیہ کے ہمراہ دب گئی جو کہ امدادی ٹیموں کے پہنچنے سے قبل ہی شازیہ دو کم سن بچوں سمیت جاں بحق ہو گئی۔ تاہم ریسکیو1122کی ٹیموں نے کارروائی کر کے دو کم سن بچوں آسیہ اور شہزاد سمیت ان کی ماں شازیہ کی نعشیں نکال لی ہیں۔ واقعہ کے بعد گھر میں صف ماتم بچھ گئی اور پورے علاقہ میں سوگ کا سماں پیدا ہو گیا۔ تاہم پولیس نے نعشیں ضروری کارروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی ہیں۔ اسی طرح رائے ونڈ کے علاقہ بھوتیاں گاؤں میں بارش کے دوران محنت کش اسلم کے گھر کی بوسیدہ چھت گر گئی جس کے باعث اسلم ، اکبر اور ایک مہمان وغیرہ تین افراد چھت کے ملبے دب گئے۔ ریسکیو1122 کی ٹیموں کے آنے سے پہلے ہی مقامی افراد اور پولیس نے ملبے تلے آنے والے تینوں افراد اسلم وغیرہ کو نکال لیا۔ ریسکیو ٹیموں کی مددسے زخمی ہونے والے تینوں افراد کو مقامی ہسپتال میں داخل کروا دیا گیا ہے۔ اسی طرح دھرم پورہ(مصطفٰے آباد کے علاقہ میاں میر گلی نمبر4 میں بارش کے دوران محنت کش مختار احمد کے گھر کی کھڑکیوں میں بجلی کا کرنٹ آ گیا اور بجلی کا کرنٹ آنے سے چار سالہ بچی ہجویریہ جھلس کر جاں بحق ہو گئی جبکہ اس کے دو کم سن بھائیوں اور والدہ سمیت 8 افراد جھلس کر شدید زخمی ہو گئے ہیں۔ جھلسنے والے کم سن بچی تابندہ ، والدہ اسماء بی بی اور دیگر افراد کو سروسز ہسپتال میں طبی امداد دی جا رہی ہے جبکہ چار سالہ بچی ہجویریہ کی نعش پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی ہے۔جھلس کر جاں بحق ہونے والی چار سالہ ہجویریہ کی نعش نماز جنازہ کے لئے اٹھائی گئی تو ہر آنکھ اشکبار تھی اور پورے علاقہ میں سوگ کا سماں تھا تاہم چار سالہ ہجویریہ کو نماز جنازہ کے بعد سپرد خاک کر دیا گیا۔صوبائی دارالحکومت میں طوفانی بارش کے ساتھ ساتھ دو گھنٹہ تک ژالہ باری کا سلسلہ بھی جاری رہا۔بارش بچوں کے سکول کی چھٹی کے وقت پر ہوئی جس کے باعث والدین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ سڑکوں پر کئی گاڑیاں بند ہو گئیں۔ بارش کے باعث ٹریفک کا نظام شدید متاثر ہوا اور پورے شہر میں ہی ٹریفک سست روی کا شکار رہی۔ محکمہ موسمیات کے مطابق بارش کا سلسلہ جاری رہے گا۔ آئندہ 12گھنٹوں میں خیبرپختونخوا، بالائی پنجاب میں راولپنڈی، گوجرانوالہ، سرگودھا، لاہور، فیصل آٰباد ڈویژن، ژوب ڈویژن، اسلام آباد، فاٹا، گلگت بلتستان اور کشمیر میں کہیں کہیں جبکہ ڈی جی خان، ملتان، ساہیوال ڈویڑن میں چند مقامات پر تیز ہواوٰں و آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔

مزید : صفحہ آخر