’خبردار! حمل کے دوران خواتین کو اس ایک جنسی عمل سے ہر صورت گریز کرنا چاہیے کیونکہ۔۔۔‘ سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کو وارننگ دے دی

’خبردار! حمل کے دوران خواتین کو اس ایک جنسی عمل سے ہر صورت گریز کرنا چاہیے ...
’خبردار! حمل کے دوران خواتین کو اس ایک جنسی عمل سے ہر صورت گریز کرنا چاہیے کیونکہ۔۔۔‘ سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کو وارننگ دے دی

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) انٹرنیٹ نے لوگوں کو فحش مواد تک آسان ترین رسائی دے دی ہے جس کی وجہ سے جنسی عمل کے غیرفطری طریقے تیزی سے فروغ پا رہے ہیں اورایڈز جیسی مہلک بیماریاں عام ہو رہی ہیں۔ اب ماہرین نے ایسے ہی غیرفطری جنسی عمل کرنے والے افراد کو انتہائی بری خبر سنا دی ہے۔

دی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق ماہرین نے بتایا ہے کہ ”جنسی عمل میں شرمناک طور پر منہ کا استعمال کسی بھی طور صحت مندانہ نہیں لیکن یہ حاملہ خواتین کے لیے انتہائی خطرناک ہوتاہے کیونکہ دوران حمل ان کا مدافعتی نظام کمزور ہوتا ہے اور وہ جنسی عمل سے لاحق ہونے والی بیماریوں کے نشانے پر ہوتی ہیں۔ ایسے میں جنسی عمل کا یہ انتہائی شرمناک طریقہ اپنانا ان کی زندگی کو داﺅ پر لگا سکتا ہے۔“

اپنی بیگمات کی کمائی پر زندگی گزارنے والے مَردوں کے بارے میں سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ کوئی شوہر ایسا سوچے بھی نہ، سب سے بڑا نقصان یہ ہوتا ہے کہ۔۔۔

زچہ و بچہ کی ایک ماہر ڈاکٹر نتالی گرین وولڈ کا کہنا ہے کہ ”حاملہ خواتین اگر جنسی عمل میں منہ کا استعمال کریں تو نہ صرف ان کے جنسی بیماریوں میں مبتلا ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں بلکہ ان کے پیٹ میں موجود بچے کو بھی وہ بیماری لاحق ہونے کا 50فیصد امکان ہوتا ہے۔ بالخصوص حمل کے آخری تین ماہ میں جنسی عمل کا یہ طریقہ انتہائی خطرناک ہوتا ہے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس