A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 0

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

Error

A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 2

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

کرکٹ بورڈ کے نئے چیئرمین

کرکٹ بورڈ کے نئے چیئرمین

Sep 07, 2018

پاکستان میں سیاسی تبدیلی کے ساتھ ہی کرکٹ بورڈ میں بھی تبدیلی آ گئی ہے، معروف چارٹرڈ اکاؤنٹینٹ، آئی سی سی کے سابق صدر اور خزانچی احسان مانی تین سال کے لئے چیئرمین کرکٹ کنٹرول بورڈ بن گئے،اُن کا نام وزیراعظم عمران خان نے تجویز کیا اور بورڈ کے رکن کی حیثیت سے نامزد کیا تھا،وہ بلامقابلہ چیئرمین منتخب ہوئے ہیں۔عمران خان کے وزیراعظم بننے سے کھیل کے حلقوں کی طرف سے بڑی توقعات وابستہ کر کے اُن کا اظہار کیا گیا،خصوصاً کرکٹ کے بارے میں بہت مثبت ردعمل تھا کہ وہ خود کرکٹ ٹیم کے مایہ نازکپتان رہے اور دُنیا میں شناخت بنائی۔ 1992ء کا عالمی کپ اُنہی کی قیادت میں جیتا گیا تھا۔احسان مانی ایک تجربہ کار شخصیت ہیں اُن کی ذات سے بھی بہت سی امیدیں وابستہ کی گئی ہیں، زیادہ تر کرکٹ کے کھیل سے متعلق ہیں کہ اس میں اقربا پروری اور پرچی سسٹم کا خاتمہ ہونا چاہئے اور کھلاڑیوں کا انتخاب کسی تعصب یا کسی ’’بڑے‘‘کی پسند نا پسند کا مرہون منت نہیں ہونا چاہئے۔ احسان مانی نے واضح کیا ہے کہ وہ محکمانہ کرکٹ کو ساتھ لے کر چلیں گے۔ خدشہ تھا کہ شاید یہ سلسلہ ختم کر دیا جائے کہ عمران خان محکمانہ کرکٹ کی بجائے ڈومیسٹک اور ریجنل کرکٹ کے حامی ہیں، تاہم نئے چیئرمین کے اعادہ و یقین دہانی کی وجہ سے محکمانہ کرکٹ کے اختتام والے خدشات دور ہو گئے اور کھلاڑی بھی بے روزگاری سے بچ جائیں گے۔احسان مانی نے پی ایس ایل کی بہتری کی بھی بات کی اور زیادہ میچ پاکستان میں کرانے کے علاوہ بھارت سے بھی بہتر کھیل کے انتظامات کی بات کی ہے۔کرکٹ کے شائقین کو توقع ہے کہ نئے چیئرمین اپنے ان الفاظ پر قائم رہیں گے، نہ صرف بورڈ سے اقربا پروری ختم کی جائے گی،بلکہ ایسوسی ایشنوں کا نظام اور کارکردگی بھی بہتر بنائی جائے گی، ملکی ٹیلنٹ کے استعمال اور تربیت کا نظام اعلیٰ درجہ کا بنانے کے علاوہ کرکٹ اکیڈمی اور کرکٹ گراؤنڈوں کے ساتھ ساتھ ڈریسنگ رومز وغیرہ کے بارے میں شکایات دور کی جائیں گی۔احسان مانی کا خیر مقدم اور نیک توقعات ہیں۔

مزیدخبریں