ا مریکا سفارت خانے کی القدس منتقلی کا فیصلہ تبدیل نہیں کر ے گا: ڈیوڈ فریڈمین

ا مریکا سفارت خانے کی القدس منتقلی کا فیصلہ تبدیل نہیں کر ے گا: ڈیوڈ فریڈمین
ا مریکا سفارت خانے کی القدس منتقلی کا فیصلہ تبدیل نہیں کر ے گا: ڈیوڈ فریڈمین

  

مقبوضہ بیت المقدس (اے این این )اسرائیل میں متعین امریکی سفیر ڈیوڈ فریڈمین نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کا فیصلہ تبدیل نہیں کریں گے۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق ایک انٹرویو میں ڈیوڈ فریڈ مین کا کہنا تھا کہ میرا نہیں خیال کہ امریکا کی آنیوالی انتظامیہ ڈونلڈ ٹرمپ کے اعلان یروشلم کو منسوخ کرے گی۔ اگر کوئی حکومت ٹرمپ کے اعلان کو تبدیل کرے گی تو اس کے نتیجے میں ایک بڑا تنازع پیدا ہوسکتا ہے۔شام کی وادی گولان کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں امریکی سفیر کا کہنا تھا وادی گولان کی شام کو واپسی کا تصور بھی محال ہے۔ وادی گولان اب اسرائیل کا اٹوٹ انگبن چکا ہے جسے کبھی اسرائیل سے الگ کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ان کے خیال میں وادی گولان کی شام کو واپسی اسرائیل کی سلامتی کی ایک بڑی مصیبت میں ڈال سکتی ہے۔ 

ان کا کہنا تھا کہ امریکی انتظامیہ ڈونلڈ ٹرمپ کی قیادت میں شام کی وادی گولان کو اسرائیل کا حصہ بنانے پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے۔یادرہے کہ گذشتہ برس دسمبر میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ مقبوضہ بیت المقدس کو قابض اسرائیلی ریاست کا دارالحکومت قرار دیا۔ انہوں نے حکم دیا امریکا کے سفارت خانے کو بیت المقدس منتقل کیا جائے۔ رواں سال فلسطینی یوم نکبہ پرامریکی سفارت خانہ تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کردیا گیا۔

مزید : بین الاقوامی