گھر کے دو ملازمین نے 14 سالہ لڑکی کا گینگ ریپ کر دیا اور پھر اسے ۔۔۔  ایسی شرمناک ترین خبر آگئی کہ انسان کسی پر بھی اعتبار کرنا ہی چھوڑ دے 

گھر کے دو ملازمین نے 14 سالہ لڑکی کا گینگ ریپ کر دیا اور پھر اسے ۔۔۔  ایسی ...
گھر کے دو ملازمین نے 14 سالہ لڑکی کا گینگ ریپ کر دیا اور پھر اسے ۔۔۔  ایسی شرمناک ترین خبر آگئی کہ انسان کسی پر بھی اعتبار کرنا ہی چھوڑ دے 

  

نئی دلی(نیوز ڈیسک)بھارت سے جنسی جرائم کی خبریں تو ہر روز آتی ہیں مگر کبھی کبھار تو انتہا ہو جاتی ہے۔ ایک ایسی ہی لرزہ خیز خبر ریاست اترپردیش سے آئی ہے جہاں گھر کے دو ملازموں نے ہی صاحب خانہ کی نوعمر بیٹی کی اجتماعی عصمت دری کی اور پھر غیر معمولی درندگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اُسے قتل کر ڈالا۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق 14سالہ لڑکی کی عصمت دری کے بعد اسے قتل کرنے والے دونوں درندہ صفت نوجوان کئی سال سے اس گھر میں ملازم تھے۔ یہ لرزہ خیز واقعہ ریاست اتر پردیش کے شہر ہاپور ڈسٹرکٹ میں پیش آیاہے ۔ واقعہ کا واحدعینی شاہد مقتولہ کا چھوٹا بھائی ہے۔ اس پر بھی درندوں نے حملہ کیا مگر وہ خوش قسمتی سے بچ نکلا۔ 

اتبدائی طور پر پولیس اسے ڈکیتی کے نتیجے میں قتل کا واقعہ سمجھ رہی تھی لیکن جب ہسپتال میں پڑے زخمی لڑکے کو کچھ ہوش آیا تو اس نے رونگٹے کھڑے کر دینے والی تفصیلات بیان کر دیں۔بچے نے بمشکل تمام اپنے اور اپنی بہن کے ساتھ پیش آنے والے اندوہناک واقعہ کی کچھ تفصیلات لکھ کر بتائیں، کیونکہ وہ گردن پر گہرے زخموں کے باعث بول نہیں سکتا تھا۔ 

پولیس کوملنے والی تفصیلات کے مطابق مقتولہ لڑکی کی والدہ اور بڑا بھائی رشتہ داروں کے ہاں گئے ہوئے تھے جبکہ والد اپنے ڈیری فارم پر تھا۔ اس روز لڑکی غیر متوقع طور پر سکول سے جلد واپس آگئی۔ اس کی والدہ اور بڑا بھائی ابھی واپس نہیں آئے تھے لہٰذا لڑکی کو گھر میں تنہا پاکر شیطان صفت ملازمین نے اسے اجتماعی زیادتی کانشانہ بنایا اور پھر پکڑے جانے کے خوف سے اسے قتل کر ڈالا۔ چونکہ اس کے چھوٹے بھائی نے یہ واقعات دیکھ لیے تھے تو ملزمان نے اس پر بھی حملہ کر دیا اور اس کے گلے پر چھری چلا کر اسے قتل کرنے کی کوشش کی لیکن وہ معجزانہ طور پر زندہ بچ گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ایک ملزم زیر حراست ہے جبکہ دوسرا فرار ہو گیا ہے، تاہم اس کی تلاش جاری ہے۔ 

مزید : ڈیلی بائیٹس