15ستمبر تا 15اکتوبر تک کورونا کی دوسری لہر خطرناک، داخلی اور خارجی عمرہ شروع کرنے کا کوئی فیصلہ نہیں ہوا، سعودی حکام 

15ستمبر تا 15اکتوبر تک کورونا کی دوسری لہر خطرناک، داخلی اور خارجی عمرہ شروع ...

  

 لاہور(میاں اشفاق انجم سے) حرم کھولانہ طواف شروع ہو سکا، اور نہ داخلی اور خارجی عمرہ شروع ہونے کی حتمی تاریخ آئی سب تاریخیں سعودی عمرہ کمپنیوں کی طرف سے سوشل میڈیا پر وائرل کی گئیں افواہوں تک محدود۔ انٹر نیشنل فلائٹس کی بحالی، داخلی اور خارجی عمرہ کرونا کی دوسری لہر کے ثرات سے مشروط، سعودی حکام کرونا مضمرات پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ پہلے مرحلے میں میڈیکل شعبہ سے وابستہ افراد کو سعودی عرب لایا جا رہا ہے دوسرے مرحلے میں سعودی شہریوں کو اپنے ملک میں آنے کی اجازت ہو گی۔ اس کے بعد سعودیہ میں ملازمت کرنے والے اقامہ ہولڈر کو اجازت ملے گی پہلے داخلی افراد کے لیے طواف اور نمازوں کے لیے حرم کھولے گا اس کے بعد داخلی افراد کے لیے عمرہ شروع ہو گا پھر کرونا کے حوالے سے ڈبلیو ایچ او کی حتمی کلیئرنس رپورٹ آنے کے بعد دنیا بھر کے لیے محدود عمرہ شرو ع کرنے کا فیصلہ ہو گا۔ سعودی عمرہ کمپنیوں کو اپنی تیاریاں شروع کرنے کی ہدایت جاری کرتے ہوئے سعودی وزات الحج نے اپنے معاملات نئے سرے سے منظوری کے لیے پیش کرنے اور دفاتر اور ہوٹلز کے لیے این او سی حاصل کرنے کا کہا ہے، سعودی ذرائع نے بتایا ہے عمرہ اور حج آپرشن کی معطلی سے ہونے والے نقصان کا بھی جائزہ لیا جا رہا ہے انٹر نیشنل فلائٹس کی بحالی طواف اور عمرہ کے لیے نئے سرے سے ایس او پیز ترتیب دئیے جا رہے ہیں ٹرانسپورٹ اور ہوٹلز انڈسٹریز سمیت زیارت اور عمرہ سے منسلک تمام اداروں سے تجاویز مانگی گئیں ہیں یہ بھی پتہ چلا ہے کرونا کی موجودہ صورتحال کا بھی روزانہ کی بنیا د پر جائزہ لیا جا رہا ہے یورپی ممالک میں شروع ہونے والی کرونا کی دوسری لہر کے خوف سے حرمین شریفین میں سارے امور معطل رکھنے کا فیصلہ ہوا ہے۔ سعودیہ میں کرونا کی دوسری لہر کو 15ستمبر سے 15اکتوبر تک خطر ناک قرار دیا گیا ہے۔ یکم نومبر کو تمام امور کا دوبارہ جائزہ کے لیے اجلاس بلانے کی تجویز ہے یہ بھی معلوم ہوا ہے سعودی عمرہ کمپنیاں اس وقت خود ہی عمرہ شروع کرنے کی تاریخ کا شو شہ چھوڑتی ہیں جب دنیا بھر سے ان کے ساتھ عمرہ کرنے والی کمپنیاں گزشتہ 8ماہ سے روکے ہوئے اپنے بقایا جات کا مطالبہ کرتی ہیں، سعودی عمرہ کمپنیاں ان کو حوصلہ دینے کے لیے اور عمرہ شروع ہونے پر ان کی رقوم اڈجسٹ کرنے کو نوید کے ساتھ سوشل میڈیا پر خبریں جاری کردیتی ہیں۔ حالانکہ ان خبروں اور افواہوں کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں ہوتا، سعودی وزارت الحج کے ذرائع کا کہنا ہے خادم حرمین شریفین نے واضع احکامات جاری کر رکھے ہیں عمرہ ذائرین کی حفاظت ہماری پہلی ترجیح ہے حرمین شریفین میں لگائی گئی پابندیاں مجبوری ہیں خوشی سے نہیں لگائی گئیں،حرم کھولنے، طواف اور عمرہ شروع ہونے اور انٹرنیشنل فلائٹس کی بحالی کے حوالے سے سرکاری اعلان کا انتظار کیا جائے اگر کرونا فوری مکمل کنٹرول ہو گیا تو بحالی کا اعلان جلد کر دیا جائے گا۔ 

عمرہ کمپنیاں 

مزید :

صفحہ اول -