کینسر مریضوں کا رش‘ شیر شاہ روڈ پر ”منیارٹو“ ہسپتال بنانے کا فیصلہ

کینسر مریضوں کا رش‘ شیر شاہ روڈ پر ”منیارٹو“ ہسپتال بنانے کا فیصلہ

  

ملتان (وقائع نگار)کینسر کے مریضوں کے بڑھتے ہوئے رش اور دیگر تین صوبوں کے مریضوں کے علاج معالجہ کی سہولیات میں اضافے کے پیش نظر" منیار ٹو ہسپتال " بنانے کا فیصلہ کیا گیا یے۔اس حوالے سے  سولہ ایکٹر پر مشتمل شیر شاہ روڈ پر واقع سرکاری اراضی  کی نشاندہی کا عمل بھی مکمل کرلیا گیا ہے۔یہ سرکاری زمین تقریبا سات سال قبل سیلاب کی نظر ہونے والی پٹرولنگ پولیس کی چیک پوسٹ کے بلمقابل بتائی جارہی ہے۔باوثوق ذرائع کے مطابق منیار ٹو کی تعمیر کے ساتھ ساتھ اس میں ڈاکٹروں۔نرسوں اور پیرامیڈیکس سٹاف کیلئے رہائش ایریا بھی مختص کیا جائے گا۔جس میں مذکورہ سٹاف رہائش پذیر ہوگا۔واضح رہے گزشتہ ڈیڑھ سال سے منیار ٹو ہسپتال بنانے کیلئے سرکاری زمین کی تلاش جاری تھی۔جس کے لئے کمشنر ملتان کو خط بھی لکھا گیا۔پٹواریوں نے سرکاری زمین کا نشاندہی نا ہونے پر اپنی حتمی رپورٹ متعلقہ اعلی حکام کو بھیجوا دی تھی۔لیکن اس کے باوجود منیار ٹو ہسپتال کیلئے سرکاری  اراضی کو ڈھونڈنا جاری رکھا گیا۔بتایا جارہا ہے منیار ٹو کی تعمیر سے جنوبی پنجاب۔سرحد۔بلوچستان کے مریضوں کو کینسر کے علاج کرانے میں آسانی پیدا ہوسکتی ہے۔مزید یہ کہ نشتر منیار ہسپتال انتظامیہ نے مذکورہ زمین کے حصول کیلئے اپنا پیپر ورک بھی مکمل کرلیا ہے۔ضلعی انتظامیہ کی جانب سے  منظوری کے بعد کیس  صوبائی حکومت کو بھیجا جائے گا۔اور پھر پی سی ون تیار ہوگا۔جبکہ نشتر منیار ہسپتال میں 40 کروڑ روپے سے زائد مالیت کی لینک (Linac) مشین  نصب ہونے کی تیاریاں اپنی اخراج مراحل میں پہنچ گئی ہے۔اس حوالے سے منیار ہسپتال انتظامیہ نے مذکورہ مشین کو نصب کرنے کیلئے علیحدہ سے بلڈنگ بھی مکمل تیار کرلی ہے۔ذرائع کے مطابق لینک مشین کی شعاعوں  کے ذریعے کینسر کے مریضوں کا علاج کیا جاتا ہے۔جو کافی سود مند علاج ہے۔اس کے علاؤہ منیار ہسپتال میں خواتین کے بچے دانی کے کیسنر کے علاج کیلئے بریکی تھراپی مشین بھی فعال ہوچکی ہے۔جس سے مریض فائدے حاصل کررہے ہیں۔ علاوہ ازیں پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کی زیر نگرانی چلنے والا نشتر ہسپتال میں واقع منیار ہسپتال میں سالانہ (1) لاکھ سے زائد مریضوں کو علاج معالجہ کہ سہولیات دی جارہی ہیں۔اسیطرح ہر ماہ تقریبا 9ہزار پیشنٹ کا فری چیک اپ ہوتا ہے گزشتہ سال یکم جنوری سے لیکر دسمبر 2019 تک مجموعی طور  منیار ہسپتال میں 2 لاکھ 97 ہزار 6 سو 39 مریضوں کے مفت ٹیسٹ کیئے گئے ہیں۔ہسپتال ذرائع کے مطابق کینسر کے مریضوں کو مفت ٹیسٹوں کی سہولیات فراہم کرنے کی شرح 44 فی صد تک ہے۔منیار ہسپتال انتظامیہ کے مطابق یہ ادارہ وفاق کے انڈر آتا ہے۔صوبائی حکومت سے اسکا کوئی لینا دینا نہیں ہے۔مخیر حضرات کے مالی تعاون سے غریب کینسر کے مریضوں کو بہترین علاج کی سروس مہیا کی جاتی ہے۔

منیارٹو

مزید :

صفحہ اول -