سی سی پی او لاہور کی تعیناتی، حکومت اور آئی جی پنجاب میں اختلافات، شعیب دستگیر نے کام جاری رکھنےسے انکار کردیا

سی سی پی او لاہور کی تعیناتی، حکومت اور آئی جی پنجاب میں اختلافات، شعیب ...
سی سی پی او لاہور کی تعیناتی، حکومت اور آئی جی پنجاب میں اختلافات، شعیب دستگیر نے کام جاری رکھنےسے انکار کردیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سی سی پی او لاہور کی تعیناتی کے معاملے پر حکومت اور آئی جی پنجاب میں ایک مرتبہ پھر اختلافات پیدا ہوگئے ہیں اور آئی جی پنجاب نے بغیر وردی وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ملاقات کرکے موجودہ صورتحال میں کام جاری رکھنے سے انکار کردیا۔

نجی ٹی وی چینل جی این این کے مطابق وزیراعلیٰ سے ملاقات میں آئی جی پنجاب نے واضح کیا کہ وہ موجودہ صورتحال میں کام جاری نہیں رکھ سکتے ، آئی جی پنجاب نےا صرا ر کیا کہ مجھے رکھ لیں یا پھر سی سی پی او عمر شیخ کو ، ہم اکٹھے نہیں چل سکتے ۔ 

سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے تبصرہ کرتے ہوئے بتایا کہ  کچھ دن پہلے ذوالفقار حمید کو بدل کر عمر شیخ کو سی سی پی او لاہور لگادیا گیا اور وزیراعظم کے ایک ایڈوائزر نے گورنر ہائوس سے تعیناتی کرائی ، آئی جی اور وزیراعلیٰ پنجاب کو اعتماد میں نہیں لیاگیا جس پر آئی جی پنجاب کا موقف ہے کہ چند دن پہلے عمر شیخ کو پروموٹ نہیں کیاگیا، ان کی شہرت اچھی نہیں اور مبینہ کرپشن کے سنگین  الزامات ہیں۔ انہوں نے وزیراعلیٰ سے کہا کہ میں آئی جی ہوں ، مجھ سے کسی نے پوچھا بھی نہیں اور پھر ایک ایسے شخص کو تعینات کیاگیا جس پر سنگین الزامات ہیں، آئی جی پنجاب نے کہا کہ پھر مجھ سے استعفیٰ لے لیں ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -