پنجاب میں امن و امان آئی جی تبدیل کرنے سے نہیں بلکہ ۔۔۔۔سیدحسن مرتضی نے ایوان میں حکومت کو  ناقابل عمل حل بتا دیا 

پنجاب میں امن و امان آئی جی تبدیل کرنے سے نہیں بلکہ ۔۔۔۔سیدحسن مرتضی نے ایوان ...
پنجاب میں امن و امان آئی جی تبدیل کرنے سے نہیں بلکہ ۔۔۔۔سیدحسن مرتضی نے ایوان میں حکومت کو  ناقابل عمل حل بتا دیا 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور پنجاب اسمبلی میں  پارلیمانی لیڈر سیدحسن مرتضی نےکہا ہے کہ پنجاب میں کرائم ریٹ ایک سال میں دوگنا ہو گیا ہے ،لاہور کی شاہراہوں پر آئے دن وارداتیں ہو رہیں ہیں،آئی جی تبدیل کرنے سے امن و امان ٹھیک نہیں ہوگابلکہ کسی اور کو تبدیل  کرنے کی ضرورت ہے ،اگر میں نے نام لیا  تو ایوان میں شور مچ جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی میں بحث میں حصہ لیتے ہوئے سید حسن مرتضیٰ کا کہنا تھا کہ ضروری نہیں کہ پولیس کے فنڈز میں اضافہ کر کے پولیس کو ٹھیک کیا جائے،ہمیں استحصالی رویوں کا سدباب کرنا چائیے ،پولیس پروٹوکول پر ڈیوٹیاں دینے والے اہلکاروں کو فنڈز جاری نہیں کیے جا رہے، پولیس فنڈز کے نام پر آفسر شاہی کو خوش کیا گیا،آج بھی پولیس انویسٹی گیشن میں پین کاغذات کے اخراجات مدعی برداشت کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت  تنقید کرتی ہے کہ  70 سال سے سابق حکومتیں کھا گئیں،اس تنقید سے مسائل حل نہیں ہو سکتے، پانچ ،پانچ آئی جی تبدیل کیے جا رہے،آئی جی تبدیل کرنے سے امن و امان ٹھیک نہیں ہوگابلکہ تبدیل کسی اور کو کرنے کی ضرورت ہے، نام لوں گا تو ایوان میں شور مچ جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ امن و امان پولیس،بندوق سے ٹھیک نہیں کر سکتی،میرٹ پر لوگوں کو نوکریوں نہیں دیں گے تومسائل پیدا ہوتے رہے گے،کرائم ریٹ ایک سال میں دوگنا ہو گیا ہے،لاہور کی شاہراہوں پر آئے دن وارداتیں ہو رہیں ہیں،یوم عاشور کے موقع پر بچے کو  زیادتی کے بعد قتل کیا گیا،سانحہ ساہیوال کے معصوم بچوں کو آج تک انصاف نہیں ملا ،وزرا نے سانحہ ساہیوال پر بڑی بڑی باتیں کیں لیکن انصاف نہیں ملا،لا اینڈ  آرڈر مساوی  ہو تو آج ہی مسائل ختم ہو جائیں گے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -