بنوں‘ کورونا وائرس کے بعد سیل علاقہ مندیو میں لاک ڈاؤن ختم

بنوں‘ کورونا وائرس کے بعد سیل علاقہ مندیو میں لاک ڈاؤن ختم

  

بنوں (بیورورپورٹ)کورونا وائرس کیسز کے بعد سیل کئے جانے والا علاقہ مندیو میں لاک ڈاؤن ختم کردیا گیا،وائرس سے جاں بحق سید نواز کے گھر والوں کو 14دن گھر میں قرنطینہ کرنے کی ہدایت کردی گئی جبکہ کورونا وائرس کا دوسرا کیس سامنے آنے والے علاقے سوکڑی حسن خیل میں 14اپریل تک لاک ڈاؤن جاری رہیگا تفصیلات کے مطابق کورونا سے متاثرہ شخص سے ملنے والے تمام آفراد کے ٹیسٹ منفی آ گئے ڈسٹرکٹ پولیس آ فیسر یاسر آفریدی کی ہدایت پر علاقے کا لاک ڈاؤن ختم کیا گیا گزشتہ دنوں کورونا وائرس سے فوت ہونے والے مندیو کے رہائشی مرحوم سید نواز کے ساتھ تمام ملنے والے اُن کے تمام گھر والوں، رشتہ داروں کل 9 آفراد سے ٹیسٹ کے نمونے لئے گئے تھے جبکہ اس دوان مندیو کو لاک ڈاؤن کیا گیا تھا ان افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص نہیں ہوئی اور تمام آفراد کے ٹیسٹ منفی آ گئے تمام افراد کا تعلق بنوں علاقہ مندیو سے تھا جو علاقہ پچھلے کئی دنوں سے پولیس نے مکمل لاک ڈاون کیاتھا ڈپٹی کمشنر دفتر سے ٹیسٹ رزلٹ موصول ہوتے ہی ڈی پی لاک ڈاون ختم کیا گیاجبکہ مرحوم سید نواز کے قریبی رشتہ داروں کو گھر خود میں 14 اپریل تک قرنطینہ کرنے کی ہدایت کی گئی اس موقع پر ڈی پی او یاسر آفریدی نے کہا کہ علاقہ کو لاک ڈاون کے موقع پر یہاں کے باشندوں نے بھر تعاون کیا یہ نہ صرف اپنے آ پ کے ساتھ بہت بڑا احسان کیا بلکہ آنے والے صحت مند معاشرے کو بھی پیغام دیا ہے خدا نخواستہ یہ باشندے لاک ڈاون توڑ دیتے تو علاقہ میں تباہی مچا دیتے آج اللہ کا شکر ہے کہ ان کے تعاون سے علاقہ کلیئر قرار دیا گیا ہے۔پولیس کے جوانوں کی نگرانی میں سوکڑی حسن خیل میں 30 مارچ کی شام کو شروع ہونے والا لاک ڈاون مسلسل جاری ہے جو 14 اپریل تک جاری رہے گا لاک ڈاون حیات الرحمن کے کنفرم کیس کی وجہ سے کیا گیا تھا جس کا مقصد کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا روک تھام ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -