لاک ملک بھر میں اینیمل، برڈزمارکیٹوں کی بندش سے 70فیصد پرندے، جانور ہلاک

لاک ملک بھر میں اینیمل، برڈزمارکیٹوں کی بندش سے 70فیصد پرندے، جانور ہلاک

  

کراچی،لاہور، پشاور،کوئٹہ (سٹاف رپورٹر،نیوز ایجنسیاں)کرونا وائرس سے تحفظ کیلئے گزشتہ ماہ 22 مارچ سے ملک کے چاروں صوبوں میں نافذ کیے گئے لاک ڈاؤن کی وجہ سے ملک کے مختلف شہر و ں میں بند دکانوں میں قید درجنوں پرندے اور جانور ہلاک ہوگئے۔صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی اور پنجاب کے دارالحکومت لاہور سمیت ملک کے مختلف بڑے شہروں میں جانوروں اور پرندوں کی مارکیٹیں ہیں، جہاں پر ان کی فروخت کی جاتی ہے۔ملک میں پرندوں اور جانوروں کی سب سے بڑی مارکیٹیں کراچی اور لاہور میں ہی موجود ہیں جو گزشتہ ماہ لاک ڈاؤن کے بعد بند کردی گئیں اور اس دوران دکانوں میں موجود پرندے اور جانور قید رہ گئے۔مسلسل مارکیٹیں بند رکھے جانے کی وجہ سے دکانوں میں قید 70فیصد سے زائد پرندے اور جانور ہلاک ہوگئے۔رپورٹ کے مطابق لاک ڈاؤن کی وجہ سے مارکیٹوں کی بندش کے باعث مرنیوالے جانوروں اور پرندوں میں بلیاں، کتے اور خرگوش،چڑیاں، طوطے اوردیگرشامل ہیں۔ اس ضمن میں کراچی کی اینیمل ریسکیو تنظیم عائشہ چندریگر فاؤنڈیشن(اے سی ایف) نے صوبہ سندھ حکومت سے رابطہ کرکے مزید جا نو روں کو محفوظ بنانے کی اجازت طلب کی،جو دیدی گئی اور تنظیم نے شہر میں پرندوں کی بڑی مارکیٹوں میں سے ایک امپریس مارکیٹ میں امدادی کارروائی کرکے درجنوں قید پرندو ں اور جانوروں کی زندگی کو محفوظ بنایا۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ کراچی کی طرح پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں بھی جانوروں کے حوالے سے کام کرنیوالی سماجی رہنما کرن ماہین کے مطابق مقامی انتظامیہ نے جب ان کے کہنے پر جانوروں اور پرندوں کیلئے ریسکیو آپریشن شروع کیا اور پولیس نے دکانوں کے دروازے کھولے تو درجنوں جانوروں اور پرندوں کو مردہ پایا گیا۔ دیگر بڑے شہروں میں بھی پرندوں اور جانوروں کی ہلاکت کی اطلاعات پر مقامی انتظامیہ نے سماجی تنظیموں کو دکانوں میں قید پرندوں اور جانوروں کو امداد فراہم کرنے کی اجازت دیدی ہے۔

جانور،پرندے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -