کوئٹہ، کرونا کٹس کیلئے احتجاج کرنیوالے ڈاکٹرز کا رہا ہونے سے انکار

      کوئٹہ، کرونا کٹس کیلئے احتجاج کرنیوالے ڈاکٹرز کا رہا ہونے سے انکار

  

کوئٹہ (آئی این پی) کورونا وائرس حفاظتی کٹس کی عدم دستیابی پر احتجاج کے دوران گرفتار ہونے والے ڈاکٹرز نے رہائی سے انکار کردیا جبکہ ترجمان بلوچستان حکومت نے کہا ہے کہ ینگ ڈاکٹرز کو کل دوپہر کو ہی رہا کر دیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے حفاظتی کٹس کی عدم دستیابی پر احتجاج کے دوران گرفتار ڈاکٹرز نے رہائی سے انکار کردیا ہے، ترجمان ینگ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ ینگ ڈاکٹرز نے رات تھانے میں گزاری ہے، جب تک مطالبات تسلیم نہیں ہوتے تھانوں میں ہی رہیں گے، حکومتی کمیٹی نے گزشتہ رات رابطہ کیا تھا تاہم کمیٹی کو پہلے تحقیقات کرنی چاہیے کہ ضلعی انتظامیہ نے کیوں تشدد کیا۔دوسری جانب ترجمان بلوچستان حکومت کا کہنا ہے کہ ہم نے ینگ ڈاکٹرز کو کل دوپہر کو ہی رہا کر دیا تھا، ڈاکٹرز اپنی مرضی سے تھانوں میں موجود ہیں، ڈاکٹرز سے گزارش ہے تھانہ چھوڑ کر گھر جائیں، ڈاکٹرز کو مزید اضافی کٹس فراہم کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے لہذا ڈاکٹرز کو اب اپنا احتجاج رضا کارانہ طور پر ختم کرنا چاہیے۔دوسری طرف وزیراعلی بلوچستان جام کمال نے کہا ہے کہ یہ حقیقت ہے کہ بلوچستان کا شعبہ صحت مختلف مافیاز کے ہاتھ میں رہا،مافیا میڈیکل سپلائی اورٹرانسفرپوسٹنگ پرکنٹرول چاہتا ہے۔تفصیلات کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پرجاری اپنے بیان میں وزیراعلی بلوچستان نے کہا کہ میں نے ذاتی طور پر ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن سے ملاقات کی ہے اور انہیں ڈاکٹرز کے مسئلے کے حل اورنئی آسامیاں مشتہر کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی ہے۔جام کمال نے اپنی ٹوئٹ میں کہا کہ یہ حقیقت ہے کہ بلوچستان کا شعبہ صحت مختلف مافیاز کے ہاتھ میں رہا،یہ مافیا میڈیکل سپلائی اورٹرانسفر پوسٹنگ پرکنٹرول چاہتا ہے،ینگ ڈاکٹرز اس مافیا کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں انہیں الزام نہیں دیاجاسکتا۔

جام کمال

مزید :

صفحہ اول -