کورونا کیخلاف نبردآزما پاکستان موذی وباءکا علاج دریافت کرنے والے ممالک میں شامل مگر کیسے؟ پاکستانیوں کیلئے شاندار خوشخبری آ گئی

کورونا کیخلاف نبردآزما پاکستان موذی وباءکا علاج دریافت کرنے والے ممالک میں ...
کورونا کیخلاف نبردآزما پاکستان موذی وباءکا علاج دریافت کرنے والے ممالک میں شامل مگر کیسے؟ پاکستانیوں کیلئے شاندار خوشخبری آ گئی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان موذی وباءکورونا وائرس کا علاج دریافت کرنے والے ممالک میں شامل ہو گیا ہے۔ ایوب میڈیکل کمپلیکس کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق کا کہنا ہے کہ 75 افراد کو تین گروپوں میں تقسیم کر کے تین مختلف ادویات سے علاج کا تجربہ کیا جائے گا اور ان تجربات کی روشنی میں کورونا وائرس کی دواءمیسر آنے کی امید ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایوب میڈیکل کمپلیکس ایبٹ آباد بھی امریکی قومی ادارہ صحت کیساتھ رجسٹرڈ ہو گیا ہے اور یوں پاکستان کا شمار کورونا وائرس کا علاج دریافت کرنے والے ممالک میں ہونے لگا ہے کیونکہ امریکی قومی ادارہ صحت کی لائبری برائے ادویات نے پاکستان کو اس فہرست میں شامل کرتے ہوئے ایوب میڈیکل کمپلیکس کی 20رکنی ٹیم کو مریضوں پر تجربات کرنے کیلئے اہل قرار دیدیا ہے۔ ایوب میڈیکل کمپلیکس کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق کا کہنا ہے کہ 75 افراد کو تین گروپس میں تقسیم کر کے 3 مختلف ادویات سے علاج کا تجربہ کیا جائے گا جبکہ ان تجربات کی روشنی میں دنیا کو کورونا وائرس کی دوا میسر آنے کی امید ہے۔

نجی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق نے کہا کہ پاکستانی ماہرین کی قابلیت کے اعتراف میں دوا کا تجربہ کرنے کی اجازت دی گئی ہے جس کے تحت 25,25 مریضوں کے تین گروپ بنائے جائیں گے جن میں سے ایک گروپ کو 2 ادویات ”ارتھرومائسین “ اور ”کلورو کوائن“ دی جائیں گی جبکہ تیسرے گروپ میں شامل 25 مریضوں کیلئے روایتی طریقہ علاج اختیار کیا جائے گا اور تینوں گروپ سے حاصل کردہ نتائج امریکی ادارے برائے قومی صحت کو بھجوائے جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ دواءکے تجربات کیلئے مریضوں کا چناﺅ ان کی صحت، عمر اور مرض کی شدت کی بنیاد پر ہو گا جبکہ عارضہ قلب یا دوسرے بڑے مرض میں مبتلا شخص پر تجربات نہیں کئے جائیں گے، مریضوں پر تجربات کی کامیابی کی صورت میں ایف ڈی اے کی منظوری کے بعد کورونا کی دوا دنیا کو میسر آنے کی امید کی جا سکتی ہے۔

مزید :

قومی -کورونا وائرس -