سفید پوش طبقہ لاک ڈاؤن کے باعث مشکلات کا شکار،گورنر سندھ

  سفید پوش طبقہ لاک ڈاؤن کے باعث مشکلات کا شکار،گورنر سندھ

  

کراچی (سٹاف رپورٹر)گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ سفید پوش طبقہ لاک ڈاؤن کے باعث بہت زیادہ مشکلات کا شکار ہے اس لئے انہیں راشن کی فراہمی اور یوٹیلیٹی بلوں میں آسانی کے لئے بھرپور اقدامات کی ضرورت ہے، مخیر حضرات کی جانب سے راشن اور مالی مدد کی فراہمی سے ان کی مشکلات کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے شہر کے مخیر حضرات کے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ رکن سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ اور گورنر سندھ کے مشیر امید علی جونیجو بھی اس موقع پر موجود تھے جبکہ وفد میں حاجی اقبال، محسن پردیسی اور طارق قریشی شامل تھے۔ ملاقات کے دوران کورونا سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر، لاک ڈاؤن کا شکار افرد میں راشن کی تقسیم، خصوصاً سفید پوش گھرانوں کی دشواریوں، ان کے یوٹیلیٹی بلوں میں رعایت دینے اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ گورنر سندھ نے کہا کہ یہ نہایت خوش آئند بات ہے کہ کوروناکے خلاف جنگ میں ہر طبقہ اپنی بساط کے مطابق کردار ادا کررہا ہے جوکہ ایک متحد قوم ہونے کا ثبوت ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی و صوبائی حکومتیں مل کر کورونا وائرس کے خلاف جنگ لڑرہی ہیں جبکہ لاک ڈاؤن کا مقصد اس وائرس کو پھیلنے سے روکنا ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ کے الیکٹرک کی جانب سے کم بجلی استعمال کرنے والے صارفین کو ادائیگی میں سہولت دینے سے غریب اور سفید پوش افراد کو فائدہ ہوگا۔ گورنر سندھ نے راشن کی تقسیم میں دوکانداروں اور تاجروں کو شامل کرنے کی تجویز کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے مثبت نتائج نکلیں گے۔ گورنرسندھ نے کہا کہ عوامی نمائندے مستحق افراد کی نشاندہی اور انہیں راشن کی فراہمی میں نمایاں کردار ادا کرسکتے ہیں کیونکہ یہ اپنے حلقہ کے عوام سے براہِ راست رابطہ میں ہوتے ہیں۔ حاجی اقبال نے گورنر سندھ کو بتایا کہ دبئی اسلامک بینک، کے الیکٹرک اور کول اینڈ کول کے تعاون سے مستحق افراد کو راشن اور مالی امداد دیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ شہر کے مخیر حضرات ہمارے ساتھ ہیں، مل کر لاک ڈاؤن کا شکار افراد کی مدد کریں گے کیونکہ یہ ہماری قومی ذمہ داری ہے۔

گورنر سندھ

مزید :

صفحہ اول -