مریم نوازکی ضمانت منسوخی درخواست پر نیب کو جواب داخل کرانے کیلئے مہلت

مریم نوازکی ضمانت منسوخی درخواست پر نیب کو جواب داخل کرانے کیلئے مہلت

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس سردارسرفرازاحمد ڈوگر اور مسٹر جسٹس اسجد جاوید گھرال پر مشتمل ڈویژن بنچ نے چودھری شوگر ملز کیس میں مریم نوازشریف کی ضمانت منسوخی کی درخواست پر نیب کو جواب داخل کرانے کے لئے مہلت دیتے ہوئے سماعت 28 اپریل تک ملتوی کر دی،مریم نواز شریف کی ضمانت منسوخی کے لئے چیئرمین نیب کی درخواست پر سماعت ہوئی،نیب کے وکیل نے کہا کہ مریم نواز کے جواب میں جواب الجواب جمع کروانے کے لیے مہلت کی استدعا کی،نیب کے وکیل نے مزیدکہا کہ مریم نواز ضمانت پر رہائی کا ناجائز فائدہ اٹھا رہی ہیں وہ تحقیقات میں تعاون نہیں کر رہیں لہذا ان کی ضمانت منسوخ کی جائے،عدالت نے نیب کی جانب سے جواب الجواب داخل کرانے کیلئے مہلت کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی،دوسری جانب مریم نواز شریف کے وکیل اعظم نذیر تارڑ کی جانب سے 6صفحات پر مشتمل جواب پہلے ہی جمع کروایاجاچکاہے جس میں نیب کی درخواست جرمانے کے ساتھ خارج کرنے کی استدعا کی گئی ہے،مریم نوازشریف نے اپنے جواب میں مزید کہاہے کہ نیب نے چودھری شوگر ملز کیس میں 14 ماہ خاموشی اختیار کی پھر طلب کیا،نیب کے مقدمات اور گرفتاریاں آواز دبانے کی کوشش ہے جبکہ نیب سیاسی انجینئرنگ کا کردار ادا کر رہا ہے،نیب کی درخواست سے بظاہر لگتا ہے چیئرمین نیب حکومت کے ترجمان ہیں،مریم نواز نے اپنے جواب میں نیب کی ضمانت منسوخی کی درخواست کی مخالفت کی ہے، مریم نواز کے جواب کے مطابق قانون کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے چوہدری شوگر مل میں انکی ضمانت منظور کی لاہور ہائیکورٹ نے نیب کا موقف سننے کے بعد میرٹ پر ضمانت منظور کی تھی،نیب کا کام کرپشن روکنا ہے سیاسی بیانات پر کاروائی کرنا نہیں۔

چودھری شوگرملز

مزید :

صفحہ آخر -