ملتان: کرونا کا بڑا اٹیک، مزید 9مریض جاں بحق: 26کی حالت تشویشناک 

ملتان: کرونا کا بڑا اٹیک، مزید 9مریض جاں بحق: 26کی حالت تشویشناک 

  

 ملتان، رحیم یارخان، خانقاہ شریف، بہاولپور، ڈیرہ، خانیوال، لیہ، چوک اعظم(وقائع نگار، بیورو رپورٹ، ڈسٹرکٹ رپورٹر، نمائندہ پاکستان، نیوز رپورٹر، سٹی رپورٹر، نامہ نگار) نشتر ہسپتال ملتان میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا میں   مبتلا  9 مزید   مریض جاں بحق، اموات کی مجموعی  تعداد 518ہو گئی  زیر علاج کورونا کے مریضوں کی  تعداد 90 ہو گئی،26مریضوں کی حالت تشویشناک،  شبہ میں 20 مریض زیر(بقیہ نمبر25صفحہ6پر)

 علاج، تفصیل کے مطابق فوکل پرسن نشتر ہسپتال ڈاکٹر عرفان ارشد  نے بتایا کہ  نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈز میں زیر علاج  وہاڑی کے 60 سالہ اکبر علی،خانیوال کے 49 سالہ قربان علی ملتان کے 75 سالہ خادم حسین،49 سالہ محمد سلیمان 51  سالہ صغراں بی بی،وہاڑی کے 81 سالہ  محمد آزاد،مظفر گڑھ کے 65 سالہ غلام عباس خانیوال کی 70 سالہ نذیراں بی بی اور ملتان کے 57 سالہ سعید انجم  نے گزشتہ روز  دم توڑ دیا  یوں یکم اپریل 2020  سے 7 اپریل 2021 کے درمیان کورونا کے باعث ہونے والی اموات کی مجموعی تعداد 518 ہو گئی ہے،جبکہ نشتر ہسپتال میں زیر علاج کورونا کہ مریضوں کی تعداد 90 ہو گئی ہے جن میں سے 48مریضوں کا تعلق ملتان سے ہے جبکہ زیر علاج 26 مریضوں  کی حالت تشویشناک  ہے،جبکہ کورونا کے شبہ میں 20 مریض زیر علاج ہیں جن کی رپورٹس کا انتظار  ہے،ادھر رواں سال نشتر ہسپتال میں کورونا کے شبہ میں 4 ہزار 980 افراد رپورٹ ہوئے جن میں سے 1 ہزار 860 افراد میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے،ضلع رحیم یارخان میں کورونا وائرس کے وار جاری ہیں۔گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران 23افراد جن میں 16سالہ سعید انجم15سالہ شانزہ2سالہ ام ہانی 18 سالہ شعیب حبیب43سالہ صائمہ انجم32سالہ فوزیہ فرحت48سالہ شاہدہ یاسمین22سالہ اجالا تنویر34سالہ رفعت پروین60سالہ شمشاد کوثر28سالہ زونیرہ غفور68سالہ نصرت32سالہ سمیہ عباس43سالہ اسرار احمد33سالہ مظہر عباس70سالہ عبدالمجید35سالہ عمران نذیر32سالہ سفیر احمد41سالہ ثاقب جاوید59سالہ مجید جمیل72سالہ عبدالغفور کو شیخ زاید ہسپتال لایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے متاثرہ مریضوں کے سوائپ حاصل کرنے کے بعد ان میں کورونا وائرس کی تصدیق کردی۔محکمہ صحت اور ضلعی انتظامیہ نے متاثرہ مریضوں کو ایس او پیز کے تحت گھروں میں آئسولیٹ کردیا۔محکمہ صحت سے جاری ہونے والے اعداد شمار کے مطابق رحیم یارخان میں ایکٹو کیسز کی تعداد449ہے جن میں 431مریض ہوم آئسولیٹ10مریض پی پی بلاک5مریض آر وائی کے ہسپتال اور 3مریضوں کی حالت تشویشناک ہونے پر انہیں شیخ زاید ہسپتال کے کورونا آئی سی یو وارڈ میں منتقل کیا گیا ہے۔خانقاہ شریف کے مقامی مسلم لیگی ایم پی اے میاں شعیب اویسی کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا ہے جس پر دوست و احباب نے نے ان کی صحت و تندرستی کی دعائیں کی ہیں اس موقع پر گزشتہ سئنیر ڈاکٹر زبیر نے میڈیاکے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان خاص طور پر پنجاب میں کوروناکی تیسری لہرپہلے سے بھی زیادہ خطرناک ثابت ہورہی ہے پہلے چند  دن اس کی علامات ظاہر ہوتی تھیں لیکن اب ایسا بھی نہیں ہورہا اب تو یہ وائرس فوری طور پر لنگزختم کردیتا ہے جب کوروناکے مریض ہمارے پاس آتے ہیں توان کے  90 فیصد لنگز کام نہیں کر رہے ہوتے روز بروز مریضوں کی تعداد اور اموات بڑھتی جارہی ہیں 7اپریل بروز بدھ  24 گھنٹوں میں 102 کوروناکے مریض جانبحق ہوئے ہیں اور 4004نئے کیس رجسٹرڈ ہوئے ہیں۔7 اپریل تک صرف پنجاب میں کورونا مثبت مریضوں کی تعداد 237594 ہے لکین معصوم عوام اب بھی اس طرف توجہ نہیں دے رہی اگر ہم نے اسے جھوٹ اور پروپیگنڈہ سمجھ کر کورونا ایس او پیز پر عمل ناکیا تونتائج بہت بھیانک ہوں گے اور حکومت کو مکمل لاک ڈان کرناپڑے گا جس سے بے روزگاری میں مزید شدید تر ین اضافہ ہوگا جو غریب طبقہ اور تاجر برادری کے لیے ناقابل برداشت ہوگا اور ملک میں افراتفری پھیلے گی۔اس لیے کورونا ایس او پیز پر خود بھی عمل کریں اور دوسروں کو بھی اس پر عمل کرنے کی ہدائیت کریں۔اس بارے میں مقامی انتظامیہ کابھرپور ساتھ دیں تاکہ کورونا کی تیسری لہرکے سائیکل کوتوڑاجاسکے۔حکومت کی سست رفتاری کے سبب 50 سال سے زائد عمر افراد کی کورونا ویکسی نیشن کا عمل بھی التوا کا شکار ہے۔اور ایسے افراد کی جانب سے 1166 پر پیغام بھیجنے کے بعد تصدیقی پیغام ملنے کے باوجود بھی کورونا وائرس سے بچا کی ویکسی نیشن نہیں کی جا رہی ہے۔50 سال سے زائد عمر افراد کورونا ویکسی نیشن کے لئے نزدیکی سنٹرز سے رجوع کرتے ہیں تو انہیں ویکسین نہیں لگائی جاتی۔دوسری جانب 60 سال یا زائد عمر کے ایسے افراد جنہوں نے کورونا ویکسین کی دونوں ڈوز(خوراک)لگوا لی ہیں۔انکے لئے ویکسی نیشن سرٹیفیکٹ کا حصول بھی دشوار گذار مرحلہ بنا ہوا ہے۔اور نادرا دفاتر یا نیشنل امیونائزیشن مینجمنٹ سسٹم کی ویب سائٹ پر رجوع کرنے کے باوجود ویکسی نیشن سرٹیفیکٹ نہیں مل رہے ہیں۔پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن(پی ایم اے)پنجاب کے جوائنٹ سیکرٹری  ڈاکٹر ماجد رشید خان نے اس صورتحال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کورونا ویکسی نیشن کا عمل تیز کرے۔کورونا ویکسین سنٹرز اور عملہ کی تعداد بڑھائی جائے۔50 سال یا زائد عمر کے افراد کی کورونا سے بچا کی ویکسی نیشن فوری شروع کی جائے جبکہ 60 سال یا زائد عمر کے افراد کو کورونا ویکسین سرٹیفیکیٹ سہل طریقے سے بلا تاخیر جاری کئے جائیں حکومت پنجاب کی ہدایت پر کورونا ضابطہ اخلاق پر مکمل عملدرآمد کیلئے ضلعی انتظامیہ کی کارروائیاں جاری ہیں۔ڈپٹی کمشنر مظفر خان سیال کی خصوصی ہدایات پر ضلع بھر کے اسسٹنٹ کمشنر نے بازاروں اور مارکیٹس کا اچانک دورہ کر کے ضابطہ اخلاق پر پابندی کو یقینی بنایا اور خریداری کے لئے آنے والوں کو کورونا ضابطہ اخلاق خصوصاً ماسک کے استعمال کی سختی سے ہدایت کی۔انہوں نے صوبائی حکومت کے احکامات کے مطابق شام 6 بجے تمام بازار بند کرنے پر عملدرآمد کے لئے بھی شہر کی مارکیٹوں کا دورہ کیا اور خلاف ورزی پر کئی دوکانوں کو سیل کر دیا۔انہوں نے دوکانداروں کو کہا کہ ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد کیا جائے تا کہ کرونا کو مزید پھیلنے سے روکا جا سکے۔اسسٹنٹ کمشنرز اور سیکرٹری ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے بس اور ویگن سٹینڈز میں کرونا ایس او پیز عملدرآمد کا جائزہ لیا اور ہدایت کی کہ فیس ماسک اور ہینڈ سینی ٹائزر کا استعمال کیا جائے اور آپس میں سماجی فاصلہ برقرار رکھا جائے تاکہ اپنی اور دوسروں کی زندگی محفوظ رہے۔ حکومت پنجاب کی ہدایت پر ضلع ڈیرہ غازیخان میں کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد کیلئے اقدامات کیے جا رہے ہیں بندش کے اوقات اور کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی پر 16دکانیں سربمہر کرنے کے ساتھ 41ہزار روپے جرمانہ بھی عائد کردیاگیا. ڈپٹی کمشنر کیپٹن (ر) محمد علی اعجاز کی زیرنگرانی ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو احمد حسن رانجھا نے گزشتہ شب  بندش کے اوقات کی خلاف ورزی پر ایک دکان سربمہر کرنے کے ساتھ 35ہزار روپے جرمانہ عائد کیا. اسسٹنٹ کمشنر محمد اسد چانڈیہ نے گدائی کے علاقہ میں دس دکانوں کو سیل کیا. کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی پر اسسٹنٹ کمشنر محمد اسد چانڈیہ نے پانچ دکانیں سربمہر کرنے کے ساتھ چھ ہزار روپے جرمانہ بھی عائد کیا.  کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنیوالوں کے خلاف کریک ڈاون کے دوران گزشتہ 24گھنٹوں میں 22 کاروباری مراکز کو سیل کیا گیا۔اسسٹنٹ کمشنر سٹی خواجہ عمیر محمود نے سیداں والا بائی پاس پر واقع2 ریسٹورنٹس اور کینٹ میں 4دکانوں کو سیل کیا جبکہ پرائس مجسٹریٹ نعمان عابد نے گردیزی مارکیٹ اور گول باغ کے ایریا میں ایک سنوکر کلب، ایک جم اور3 دکانوں کو سیل کیا۔اسی طرح اسسٹنٹ کمشنر شجاع آباد محمد زبیر نے11 دکانوں کو سر بمہر کیا۔ عوامی مطالبات اور اپیلیں بے سود، ایس او پیز کیخلاف ورزیاں مسلسل جاری کوئی ادارہ،دفتر ایسا نہیں جہاں ایس او پیز کی پابندی کی جارہی ہو کرونا وائرس پھیلنے سے شدید خطرات لاحق ہوگئے ڈپٹی کمشنر اچانک دورہ کرکے پابندیوں پر عملدرآمد یقینی بنائیں عوامی سیاسی وسماجی حلقوں کا مطالبہ تفصیل کے مطابق خانیوال شہر میں 2فیصد سے بھی کم لوگوں میں ایس او پیز پر پابندی بارے عملدرآمد کیا جارہا ہے جبکہ 98فیصد اداروں اور دیگر لوگوں میں ان ایس او پیز پر پابندیوں کا کوئی اثر نہ ہوپارہا ہے جن میں دفتر ڈپٹی کمشنر، تمام تحصیلداروں کے دفاتر، احاطہ کچہری، مکمل بازار مارکیٹ، میونسپل آفس،میپکو آفس، ایجوکیشن آفس، ہسپتالوں سمیت دیگر علاقوں میں نہ تو کوئی ماسک لگاتا اور نہ ہی سینی ٹائز ر استعمال کیا جاتا ہے عوامی،سماجی تنظیموں نے ڈپٹی کمشنر سے اچانک اور خفیہ دورہ کے دوران  حکومتی ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ کرونا کی تیسری خوفناک لہر سے قیدیوں کو محفوظ رکھنے کیلئے پنجاب حکومت نے خانیوال سمیت صوبہ بھر کی جیلوں میں قیدیوں سے ملاقاتوں پر 10روز کیلئے پابندی عائد کردی نوٹیفکیشن کے مطابق جیلوں میں قیدیوں سے اب فیملی اور عزیز واقارب بھی ملاقات نہیں کرسکیں گے کرونا کی تیسری خوفناک لہر سے قیدیوں کو محفوظ رکھنے کیلئے پابندی عائد کی گئی ہے ابتدائی طورپر پابندی کا اطلاق دس دن کیلئے ہوگا جبکہ کرونا کی صورتحال کے پیش نظر پابندی ہٹانے یا بڑھانے کا فیصلہ ہوگا۔ حکومتی ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والوں کیخلاف پولیس کا ایکشن،گزشتہ روز تھانہ بی ڈویژن،تھانہ صدررحیم یارخان،تھانہ کوٹسمابہ،تھانہ رکن پور،تھانہ آباد پور،تھانہ اقبال آباد،تھانہ سٹی صادق آباد،تھانہ کوٹسبزل،تھانہ سہجا،تھانہ اسلام گڑھ،تھانہ لیاقت پور،تھانہ ظاہر پیر،تھانہ پکالاڑاں اور تھانہ سٹی خانپور کی حدود ہوائی اڈا روڈ،گلشن اقبال،مدنی چوک،میانوالی چوک،رکن پور،آباد پور،ڈیرہ شمس،غوثیہ چوک،کوٹسبزل،موضع سہجا،بھٹہ شیخاں،چک 171/1Lموضع چوہدری،چوک فوارہ،گھنٹہ گھر چوک،ماڈل ٹاو ن،ظاہر پیر،کچی منڈی اور پکالاڑاں کے علاقوں میں کامیاب چھاپے مار کر ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والے 29ملزمان محمد فرحان،محمد انور،غلام مرتضی،غلام اکبر،محمد ظفر،محمد اقبال،ظفر،عامر مرتضی،محمد سلیم،شاہد،لیاقت،ماجد علی،فیاض احمد،محمد ندیم،محمد اجمل،محمد اکمل،محمد اسامہ،محمد ایوب،محمد اسحاق،محمد نواز،حسنین،عبدالرحمن،قمر عباس،عبدالغفار،محمد یعقوب وغیرہ کو رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا،تھانہ منتقل،سب انسپکٹروں اور اسسٹنٹ سب انسپکٹروں کی مدعیت میں پولیس نے ملزمان کیخلاف 6/7پنجاب انفیکشن ڈائزیز ایکٹ اور 269/270کے الگ الگ مقدمات درج کرکے کاروائی شروع کردی۔ اسسٹنٹ کمشنر نیا زاحمدمغل نے کہا ہے کہ  کورونا وباء کے پیش نظر حکومت کی جانب سے طے کردہ ایس اوپیز پر سختی سے عمل درآمدکیاجائے مقررہ وقت پر مارکیٹس بندکردی جائیں۔انہوں نے یہ بات مارکیٹوں کی بندش کی چیکنگ کرنے کے موقع پر کہی۔انہوں نے کہا کہ شہری ذمہ دار ہونے کا ثبوت دیں حکومت کی طرف سے لگائی گئی پابندیوں پر عمل کریں انہوں نے کہا یہ اقدامات شہریوں کی زندگیوں کے تحفظ اور وائرس کو پھیلنے سے بچانے کے لئے اٹھائے گئے ہیں تمام شہری حکومت کے شانہ بشانہ چلیں اور تعاون کریں۔انہوں نے اس موقع پر کھلی ہونے والے مارکیٹوں کا معائنہ کیا اور انہیں کورونا ایس اوپیز پر سختی سے عمل کرنے کی ہدایت کی۔

کرونا وائرس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -