لاہور ہائی کورٹ، پی سی بی کا ترمیم شدہ  آئین حکام سے پیروائزکمنٹس طلب

  لاہور ہائی کورٹ، پی سی بی کا ترمیم شدہ  آئین حکام سے پیروائزکمنٹس طلب

  

 ملتان (خصو صی  ر پو رٹر) لاہور ہائیکورٹ ملتان بینچ کے جج مسٹر جسٹس(بقیہ نمبر6صفحہ6پر)

 مزمل اختر شبیر نے پی سی بی کا ترمیم شدہ آئین 2019 کالعدم قرار دینے سے متعلق درخواست پر حکام سے 28 اپریل کو پیراوائز کمنٹس طلب کرلیے ہیں۔ عدالت عالیہ نے قرار دیا کہ سکروٹنی کے عمل کو جاری رکھیں لیکن عدالتی حکم تک حتمی فیصلہ نہ کیا جائے۔ قبل ازیں عدالت عالیہ میں محمد صدیق نے کونسل خالد اشرف خان کے ذریعے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ 19 اگست 2019 کے پی سی بی آئین میں کلبوں کی رجسٹریشن سے متعلق ترامیم کو کالعدم قرار دیا جائے جو کہ بنیادی طور پر آئین پاکستان میں درج شق 49 کی خلاف ورزی ہے حکام کو سکروٹنی اور کرکٹ کلبز کے الیکشن سے روکا جائے۔ 5 مارچ کو جنوبی پنجاب، خیبر پختونخواہ، سینٹرل پنجاب، نارتھ کرکٹ ایسوسی ایشن اور سندھ کرکٹ بنانے کی تجویز اور معاملات ایکس بورڈ آف گورنر کے ذریعے چلانے کے 19 مارچ کے حکم کو معطل کیا جائے۔عدالت عالیہ نے مذکورہ درخواست پر کرکٹ بورڈ حکام اور وفاقی حکومت کو نوٹسز جاری کردیے ہیں۔

طلب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -