اغواء مقدمہ،پولیس سے ڈیل کے بعد نامزد ملزم ایکسائز انسپکٹر آزاد

  اغواء مقدمہ،پولیس سے ڈیل کے بعد نامزد ملزم ایکسائز انسپکٹر آزاد

  

ملتان (وقا ئع نگار)پولیس تھانہ بی زیڈ نے سولہ سالہ لڑکی کے اغوا میں ملوث نامزد ملزم ایکسائز انسپکٹر کو گرفتار کرنے کے بعد چھوڑ دیا۔متاثرین سراپا احتجاج ہوگئے۔محمد آمین نے بتایا کہ گزشتہ روز تھانہ بی زیڈ کے علاقے میں سب انسپکٹر فیصل کے ذریعے  ایکسائز انسپکٹر سکندر زمان کو مقدمہ نمبری 295/20 بجرم 365B  میں اشتہاری ہونے کی وجہ سے گرفتار کروایا۔اس  دوران مذکورہ  مدعی مقدمہ نے متعلقہ پولیس لالا موسی  کو بھی اطلاع دی۔(بقیہ نمبر38صفحہ6پر)

جس پر متعلقہ پولیس نے   تھانہ بی زیڈ سے رابط کیا۔اور کہا کہ ہم آرہے ہیں۔ مگر ملزم با اثر تھا۔اور اسکی رہائی کیلئے کچھ ہی دیر میں سفارشیں آنے لگ گئیں۔اور تھوڑی دیر بعد زیر  حراست ملزم سکندر کو اعلی افسران کی مداخلت پر چھوڑ دیا گیا۔واضح رہے ملزم سکندر زمان سابقہ ریکارڈ یافتہ بھی ہے۔جس پر پانچ مختلف نوعیت کے الگ الگ  مقدمات بھی درج  ہیں۔واضح رہے  ضلع قصور کا رہائشی آمین نے  پولیس کو درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ ۔23 جولائی 2020 کو میری بیٹی 16 سالہ صائمہ بی بی کو لیکر عزیز و اقارب کو ملنے گئی۔واپسی پر بس سٹاپ علی چک کی ٹی روڈ پر کھڑے تھے۔میں لوڈ کرانے کیلئے دکان پر گیا۔تو واپس آکر دیکھا تو صائمہ بی بی بس سٹاپ پر موجود نا تھی۔پتہ جوئی پر معلوم ہوا ہے میری بیٹی کو ندیم۔عمر دراز۔محمد  ناصر۔ وحید۔رایاض۔جاوید اقبال۔سکندر زمان معہ دو نامعلوم افراد اغوا کرنے لے گئے۔جس پر مقدمہ نمبر 295/20 بجرم 365B درج کیا۔اس بارے میں جب ایس پی گل گشت سے رابط کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ ملزم سکندر کی پروٹیکٹیو بیل پر ہونے کی وجہ سے جانے دیا گیا ہے۔اسی حوالے سے ایس ایچ او بی زیڈ امین سے پوچھا گیا ہے کہ تو انہوں نے کہا کہ ملزم سکندر پروٹیکٹیو بیل پر ہے۔

آزاد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -