لاہور ہائیکورٹ، صارف کو ریلیف ایکسٹرا ٹیکس بلوں میں شامل نہ کرنیکا حکم

لاہور ہائیکورٹ، صارف کو ریلیف ایکسٹرا ٹیکس بلوں میں شامل نہ کرنیکا حکم

  

 ملتان (خصو صی  ر پو رٹر) لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ کے جج مسٹر جسٹس جواد حسن نے بجلی کے بلوں میں ایکسٹرا ٹیکس اور اور فردر ٹیکس کو غیر قانونی اور غلط قرار دیتے ہوئے صارف پٹیشنر کو وصول شدہ رقم واپس کرنے اور آئندہ بلوں میں شامل نہ کرنے کا حکم دیا ہے۔ قبل ازیں (بقیہ نمبر51صفحہ6پر)

 عدالت عالیہ میں پیٹشنر میسرز رفیق آئس فیکٹری نے کونسل سید مزمل حسن بخاری کے ذریعے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ حکومت بجلی کے بلوں پر ایکسٹرا اور فردر ٹیکس وصول کر رہی ہے جبکہ 2013 میں ایک نوٹیفیکیشن کے ذریعے اس پریکٹس کو غیر قانونی قرار دیا گیا مگر اس کے باوجود یہ ٹیکس مسلسل وصول کیے جا رہے ہیں جس پر عدالت عالیہ نے آئندہ ٹیکس عائد نہ کرنے اور وصول شدہ رقم واپس کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -