صورتحال سنگین، حکومت کسان دشمن  پالیسیوں پر نظرثانی کرے، حضور بخش لاڑ

صورتحال سنگین، حکومت کسان دشمن  پالیسیوں پر نظرثانی کرے، حضور بخش لاڑ

  

 بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)مرکزی چیئر مین جے آئی کسان پاکستان(بقیہ نمبر53صفحہ7پر)

 جام حضور بخش لاڑ نے کہا ہے کہ پاکستان ایک زرعی ملک ہے۔ناقص پالیسیوں کی وجہ سے ہمارا زراعت کا اہم شعبہ اس وقت دگرگوں اور بدترین صورتحال سے دوچار ہے۔افسوس ناک امر یہ ہے کہ زرعی طور پر خود کفیل پاکستان میں کسان دن بدن بدحال ہوتا جارہا ہے۔ پورے پاکستان کیلئے خوراک پیدا کرنے والا کسان آج دو وقت کی روٹی کیلئے ترس رہا ہے۔حکومت کی کسان دشمن پالیسیوں کی وجہ سے کاشتکارمعاشی بدحالی کاشکار ہورہے ہیں وہ جے آئی کسان جنوبی پنجاب کے عہدیداران کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کی طرف سے فصلوں کی کم قیمت مقررکرنے سے کسانوں کوان کی فصلوں کاجائزمنافع ملناتودور کی بات لاگت بھی پوری نہیں ہوتی۔اونے پونے نرخوں پرفصلیں بیچنے کے باعث کاشتکار انتہائی افسردہ دکھائی دیتا ہے۔لوگ کپاس اور گندم کی بوائی کوچھوڑکرچھوٹی فصلیں کاشت کرنے پرمجبور ہیں۔اگر یہی حالات رہے تو ملک میں زرعی شعبے کوزبردست نقصان اور خوراک کی ضروریات کوپوراکرنا ممکن نہیں ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ہماری جی ڈی پی میں زراعت کاحصہ55.60فیصد،لائیوسٹاک کاحصہ11.80فیصد جبکہ67.435ملین دیہی آبادی لائیوسٹاک کے شعبے سے منسلک ہے۔بدقسمتی سے حکومت وقت کی جانب سے لائیوسٹاک کی پیداوار میں اضافے،غربت کے خاتمے اور دیہی ترقی کیلئے زبانی جمع خرچ کے سواکچھ نہیں کررہی۔اس حوالے سے ملک کا سب سے زیادہ زرخیز حصہ جنوبی پنجاب حکمرانوں کی عدم توجہی کاشکارہے۔وہاں کے لوگوں کوصحت کی بنیادی سہولیات تک میسر نہیں۔ جاگیرداروں اور وڈیروں نے غریب کسانوں کویرغمال بنایا ہواہے۔مرکزی صدر شوکت علی چدھڑ نے اجلاس سے خطا ب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت اپنی کسان دشمن پالیسیوں پر نظرثانی کرے اور کسانوں کے مفادات کو مدنظر رکھتے ہوئے جامع پالیسیاں مرتب کرے جن میں آئندہ کم از کم دس سالوں کیلئے ان شعبوں میں ترجیحات اور ضروریات کاتعین کیا جائے۔انہوں نے مزیدکہاکہ ہرسال آنے والے سیلاب کی روک تھام کے حوالے سے بھی مربوط انتظامات کیے جائیں تاکہ کاشتکاروں کے مال مویشی فصلوں اور گھربار کونقصانات سے بچایاجاسکے۔ ملکی معیشت کازیادہ تردارومدارزراعت اور اس سے وابستہ افراد سے ہے۔اگر کسان خوشحال ہوگا تو ملک وقوم ترقی کی جانب بڑھ سکیں گے۔امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب راؤ محمد ظفر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکمران اس وقت سے ڈرے جب لاکھوں کسان اپنے حقوق کیلئے ایوانوں کا رخ کرینگے غریب کسان اور مزدور ٹیکس دیتے ہیں مشکل وقت میں اس ملک کی سلامتی کیلئے اپنے خون کا آخری قطرہ تک بہا دیتے ہیں۔حکمران اگر کسان کو خوشحال کرینگے تو اس سے پاکستان خوشحال ہوگا انہوں نے کہا کہ حکمران امریکہ اور بھارت سے گندم درآمد کرتے ہیں اور اس پر عوام کا سرمایہ خرچ ہوتا ہے ہندوستان کے کسان کو منافع دینے کے بجائے اگر یہ منافع حکمران اپنے کسان کو دیتے تو آ ج ملک کی زراعت زبوں حالی کا شکار نہ ہوتی،ہم جی ایس ٹی کو نہیں مانتے ہم زکواۃ عشر کے علاوہ کسی اور ٹیکس کو نہیں مانتے، کیوں کہ غریب عوام ٹیکس دیتی ہے جس سے یہ حکمران عیاشیاں کرتے ہیں اور ان کے ٹیکسوں کو لوٹ کر اپنا سرمایہ باہر کے بینکوں میں منتقل کرتے ہیں۔وی آئی پی کلچر اور غیر ترقیاتی اخراجات کو قوم کے خون پسینے سے پورا کیا جاتا ہے۔اجلاس سے صدر جنوبی پنجاب خواجہ صغیر احمد،جنرل سیکرٹری بابر خان درانی و دیگر نے بھی خطاب کیا۔قبل ازیں نومنتخب صدر جے آئی کسان ملتان راؤ شرافت علی،صدر لودہراں اصغر شاہین،صدر خانیوا ل رانا سرفراز،صدر مظفر گڑھ شیر علی گجر نے اپنے عہدے کا حلف لیا۔

حضور بخش لاڑ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -