انسداد اتائیت کمیٹی کا اتائیوں پر 34لاکھ جرمانے کی سفارش 

    انسداد اتائیت کمیٹی کا اتائیوں پر 34لاکھ جرمانے کی سفارش 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کمشنر سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن (ایس ایچ سی سی) اور کنوینر انسداد اتائیت کمیٹی  ڈاکٹر خالد شیخ  کی سربراہی میں  انسداد اتائیت ڈائریکٹوریٹ  کی میٹنگ ہوء جس میں سیل شدہ   طبی مراکز کے نمائندوں اور مالکان کی طرف سے کلینکس کو  کھولنے کیلئے درخواستوں کا جائزہ لیا گیا۔ اس اجلاس میں  کمشنرز جاوید امین خان اور  ڈاکٹر رزاق شیخ نے بھی  شرکت کی جبکہ  میٹنگ میں ڈائر یکٹر  انسداد اتائیت ڈائریکٹوریٹ ڈائریکٹر یاسین ویسر اور ڈاکٹر رضیہ جمیل نے بھی شریک تھیں۔  ڈائریکٹوریٹ کی ٹیم نے سندھ کے چھ ڈویژنوں کے 104کیسز  کمیٹی کے سامنے پیش کئے۔ کمیٹی ممبران نے تمام کیسز کی اسکروٹنی کی جس میں 24 کیسیز حیدرآباد، 41کراچی، سات میرپور خاص، چار سکھر،چار شہید بے نظیر آباد، دو لاڑکانہ  اور 22  دیگر شامل تھے۔کمیٹی نے ان مراکز پر 34لاکھ پانچ ہزار روپے جرمانے کی سفارش کی۔ ان مراکز پر اتائیت کو فروغ دینے اور کمشن کے قواعد وضوابط پر عمل  نہ کرنے پر جرمانے عائد کرنے  فیصلہ کیا گیا۔اس موقع پر ڈاکٹر خالد شیخ نے انسداد اتائیت ڈائریکٹوریٹ کو ہدایت جاری کہ وہ ہر ڈویژن میں فوکل پرسن تعینات کریں تاکہ اتائیوں اور ریاست کی رٹ کو چیلنج کرنے والوں  کے خلاف ایف آئی آر درج کرواء جاسکے۔ جب کہ   کلینکس و طبی مراکز کے مالکان کہا گیا کہ وہ   جلد از جلد اتائیوں  سے کلینکس خالی کروائیں۔ اگر مالکان اتائیوں کی سرپرستی کرتے پائے گئے تو ان کے خلاف بھی قانونی کارروائی کی جائے گی۔میٹنگ میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا  کلینکس کے مالکان  کو میڈیا کے زریعے پبلک نوٹسز جاری کئے جائیں گہ  وہ اپنی سیل شدہ  پراپرٹی کو کھولنے کیلئے قانونی تقاضے پوری کریں۔ اگر پراپرٹی مالکان اس پر عمل نہیں کرتے تو ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -