خلیفہ وقت کی تنخواہ مزدور کے برابر ہونی چاہیے ،نامزد چیف جسٹس جوادایس خواجہ

خلیفہ وقت کی تنخواہ مزدور کے برابر ہونی چاہیے ،نامزد چیف جسٹس جوادایس خواجہ
خلیفہ وقت کی تنخواہ مزدور کے برابر ہونی چاہیے ،نامزد چیف جسٹس جوادایس خواجہ

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) نامزد چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس جواد ایس خواجہ نے مزدور کی کم سے کم اجرت سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ خلیفہ وقت کی تنخواہ مزدور کے برابر ہونی چاہیے تاکہ اسے احساس ہو سکے کہ دو ٹکے میں گزارہ کیسے ہوتا ہے۔ پنجاب میں اچھا نظام ہے 13 ہزار مزدور کی مزدوری طے ہے لیکن 35 سو مزدوری ادا کی جاتی ہے اگر آپ 13 ہزار کی جگہ ایک لاکھ 30 ہزار بھی لکھ دیں تو کوئی فرق نہیں پڑے گا کیوں کہ تنخواہ دینی ہی نہیں،بیان بازی بند کی جائے اخبارات میں دکھایا جاتا ہے کہ بہت اچھی حکومت ہے ،مزدور کی مزدوری کے حوالے سے ملک میں کوئی میکنزم نہیں ہے ، تیرہ ہزار بنیادی تنخواہ مقرر کی گئی ہے آج تیرہ ہزار میں ایک گھر کیسے چلایا جاسکتا ہے ،حکومتیں کچھ نہیں کررہیں صرف کاغذ بھرے جارہے ہیں۔عدالت میں پیش ہونے والے مزدوروں کو ان کی سابقہ مزدوری ادا کرنے کا حکم دیتے ہوئے لیبر فو رس سروے کے افسر شماریات شوکت علی کو ہدایت کی گئی کہ وہ ملک بھر میں لیبر ڈیپارٹمنٹ کی بنیا دی معلومات مہیا کریں جس کے بعد کیس کی سماعت رواں ماہ کے آ خری ہفتے تک ملتوی کر دی گئی۔

مزید : اسلام آباد