چیچنیا میں مردوں اور عورتوں کے لئے ساحل جدا کردیا گیا

چیچنیا میں مردوں اور عورتوں کے لئے ساحل جدا کردیا گیا
چیچنیا میں مردوں اور عورتوں کے لئے ساحل جدا کردیا گیا

  

گروزنی (ویب ڈیسک) روس کی شمالی قفقاز کی ری پبلک چیچنیا کے دارالحکوم گروزنی میں مردوں اور عورتوں کے لئے ساحل جدا کردیا گیا ہے۔ یہ ساحل ذخیرہ آب پر کھولا گیا ہے۔ ان دو علیحدہ ساحلوں کے درمیان دو کلومیٹر کا فرق ہے البتہ ان دونوں ساحلوں میں مشترکہ چیز اس کا نام لاگون ہے۔ اس سیاحتی مرکز کے لئے سرمایہ کاری کا منصوبہ چیچنیا کے بڑے منصوبوں میں سے ایک ہے۔ اس کو بنائے جانے کا کام تین سال پہلے شروع کیا گیا تھا اور تقریباً دو برس لگے ہیں ذخیرہ آب کی تہہ کو کائی اور کوڑے سے پاک کرنے می۔ ذخیرہ آب جسے لوگ گروزنی کاسمندر کہتے ہیں، کے ساحل پر کچھ ہوٹل، پانی کے اوپر ریستوران، کھیلوں اور صحت کا مرکز اور ڈولفن گھر تعمیر کئے جانے کا منصوبہ ہے۔ اہم ترین قابل توجہ مقام بانی میں رنگدار اور موسیقی دینے والے فوارے ہیں۔ ساحل کھولے جانے کی سب سے زیادہ خوشی خواتین کو ہے جن کے لئے امکان پیدا ہوا ہے کہ وہ جب چاہیں سکون کے ساتھ پانی میں اتر سکیں۔ مردوں کو یہ سہولت ویسے بھی حاصل تھی۔ پیراکی کے نئے مرکز پر میاں بیوی بھی اکٹھے نہیں تیر سکیں گے۔

مزید : بین الاقوامی