متحدہ کی زرداری او ر عمران کے خلاف سندھ اسمبلی میں قرار داد جمع

متحدہ کی زرداری او ر عمران کے خلاف سندھ اسمبلی میں قرار داد جمع

کراچی( سٹاف رپورٹر)ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کے خلاف سندھ اسمبلی میں مذمتی قرار داد کے جواب میں ایم کیو ایم نے بھی پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری اور تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خلاف قرار داد سندھ اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرادی ہے۔تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم کے رہنما سید سردار احمد نے جمعہ کو پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری اورپاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خلاف قرارداد سندھ اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرادی ہے۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے قومی سلامتی کے اداروں کی اینٹ سے اینٹ بجانے کی بات کر کے قومی اداروں کی تضحیک کی تھی لہذا ان کے خلاف کارروائی کی جائے۔آصف زرداری نے ماضی میں متعد د بار پاکستان آرمی کے خلاف اپنے بیانات میں ہرزہ سرائی کی ہے۔ یہ سب ایم کیو ایم کے قائد کے بیان سے قبل ہوا لیکن نہ تو قومی اسمبلی میں اور نہ ہی صوبائی اسمبلی میں کوئی قرارداد لائی گئی ۔عمران خان اور آصف زرداری کے بیانات آن ریکارڈ ہیں لیکن ایم کیو ایم کے قائد کے ساتھ تعصب کا رویہ رکھا گیا اور الطاف حسین کے خلاف قرارداد لائی گئی۔ ایم کیو ایم کے ارکان نے قرار داد کے ساتھ اخباری تراشے اور دیگر مواد بھی سندھ اسمبلی میں جمع کریا۔ قرارداد میں عمران خان کے فوج کے خلاف بھی بیانات جمع کرائے گئے ہیں۔اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرے ہوئے ایم کیو ایم کے سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر سید سردار احمد نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے ایم کیو ایم کی پیٹھ میں چھرا گھونپا ہے۔پیپلزپارٹی کو پیر کے روز اسمبلی کے فلور پر جواب دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ ہمیں قرارداد کی کاپی فراہم نہیں کی گئی اور نہ ہی ہمیں سنا گیا ہے ۔بلکہ یکطرفہ فیصلہ کرکے اجلاس کو ملتوی کردیا گیا ہے ،جو سراسر ناانصافی ہے ۔ہم اس ناانصافی کے خلاف احتجاج کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ ایجنڈے کا آخری آئٹم باقی تھا اور فنکشنل لیگ کو موقع دے دیا گیا،اسپیکر صاحب نے ہمیں سنا ہی نہیں ۔اس موقع پر ایم کیو ایم کے رہنما محمد حسین نے کہا کہ تعصب پر مبنی سیاست کی جارہی ہے۔الطاف حسین کے خلاف پورے ملک میں نفرتیں پھیلائی جارہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ سندھ اسمبلی میں آج سے پہلے سیاسی قائدین کے خلاف قرارداد نہیں آتی تھیں۔تمام پارٹیوں نے طے کیاتھا کہ کسی کی خلاف کوئی بیان یاقرارداد نہیں لائی ۔انہوں نے کہا کہ اب ایم کیو ایم بھی بھرپور قراردادیں لائی گی ۔واضح رہے کہ قومی اداروں کے خلاف اشتعال انگیز بیان دینے پر سندھ اسمبلی میں ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کے خلاف مذمتی قرارداد جمع کرا کے وفاقی حکومت سے ان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

مزید : صفحہ اول