عمران خان کی زیر صدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ،تحریک انصاف کا قومی اسمبلی میں واپس جانے کا اعلان

عمران خان کی زیر صدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ،تحریک انصاف کا قومی اسمبلی ...

اسلام آباد (این این آئی) پاکستان تحریک انصاف نے قومی اسمبلی میں واپس جانے کااعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ امید ہے حکومت جمہوری قدروں کا مظاہرہ کریگی ٗ معاہدے کے تحت واپس اسمبلی میں جارہے ہیں ٗعمران خان پیر کو خود اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کرینگے ٗ اپنے ایجنڈے کے ساتھ بھرپور اپوزیشن کا کر دار ادا کرینگے ٗ ایم کیو ایم اپنے قائد کا دفاع نہیں کر پارہی ہے ٗچوہدری نثار علی خان واضح پوزیشن لے چکے ہیں ٗدیکھنا ہے آئندہ کیا ہوگا ٗ الیکشن کمیشن کے بارے میں ہمارا موقف واضح ہے۔ جمعہ کو پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس عمران خان کی صدارت میں ان کی رہائش گاہ پر ہوا اجلاس میں ایم کیو ایم اور جے یو آئی (ف)کی جانب سے دی سیٹ کی تحاریکیں واپس لینے کے بعد اسمبلیوں میں جانے کے فیصلے اور اپنا کر دار ادا کر نے پر حکمت عملی وضع کی گئی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما شاہ محمود قریشی نے کہاکہ تحریک انصاف نے شہریوں کے ووٹوں کے تقدس کیلئے پر امن احتجاج کیا تھا اس کے بعد حکومت کے ساتھ ایک معاہدہ ہوا ہم نے اس معاہدے کی روح سے کر دار ادا کر نے کا فیصلہ کیا ہے مسلم لیگ (ن)کے ساتھ جرگہ ارکان کا بھی یہی تقاضا تھا انہوں نے کہاکہ ہم اسمبلیوں سے بلا وجہ نہیں گئے تھے اور ہماری اب اسمبلیوں میں واپسی بلا وجہ نہیں ہے گزشتہ دو روز اسلئے اسمبلی میں نہیں گئے کہ حکومت اور اس کے حلیف آزادی سے اپنا اظہار خیال کرلیں اسمبلی میں اکثریت رائے نے فیصلہ کیا ہے کہ تحریک انصا ف پارلیمنٹ میں اپنا کر دار ادا کرے حکومت نے معاہدے کی روح سے پہلے ہی فیصلہ کرلیا تھا اور کہا تھا کہ اگر تحریک آئی تو مسلم لیگ (ن)ساتھ نہیں دے گی اس کے بعد جے یو آئی (ف)اور ایم کیوایم کے درمیان حکومت کی گفت وشنید آپس کا معاملہ تھا نہ ہی ہم نے کوئی درخواست دی اور نہ ہی کوئی سودے بازی کی ہم نے تو حکومت سے کہا تھا کہ انہوں نے جو بھی فیصلہ کرنا ہے وہ فوری کرے ہم نے حکومت اور اس کے حلیفوں کو بھڑا س نکالنے کا موقع دیا ہے یہ سیاست ہے اب تحریکیں ختم ہو گئی ہیں پوری اسمبلی نے متفقہ طورپر ہمیں باقاعدہ ممبر تسلیم کیا ہے اور ہم سے درخواست کی ہے کہ ہم اپنا کر دار ادا کریں انہوں نے بتایا کہ تحریک انصا ف کے چیئر مین عمران خان پیر کو خود اسمبلی میں جائینگے اور وہاں پارلیمانی پارٹی کااجلاس ہوگا کارروائی میں حصہ لینگے ہم نے حکومت سے معاہد ہ کیا تھا کہ جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ تسلیم کرینگے اور اسمبلیوں میں اپنا کر دار ادا کرینگے انہوں نے کہاکہ جو ڈیشل کمیشن کا کام ادھورا رہ گیا جو ڈیشل کمیشن نے بہت اچھا کام کیا تھوڑی تحقیقات اور کرلیتے اور معاملے کی گہرائی میں چلے جاتے۔ایم کیوایم کے حوالے سے سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ ہم ایم کیو ایم کے رویئے کو سمجھنے کی کوشش کررہے ہیں الطاف حسین کے اپنے ساتھی ان کے بیان پر حیران ہیں اور اور ان کادفاع نہیں کر پارہے۔شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ایم کیوایم کی صفوں میں ابہام ہے اس لئے ایسے بیانات آرہے ہیں اور خط لکھے جارہے ہیں رینجرز نے 187مطلوب افراد کی طویل لسٹ دی ہے اور ان کی حوالگی کا تقاضا کیا ہے ان سب معاملات پر حکومت نے اپنی رائے قائم کر نی ہے وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان واضح پوزیشن لے چکے ہیں اب دیکھنا ہے کہ آئندہ دنوں میں کیا ہوتا ہے ۔

مزید : صفحہ اول