دسمبر میں لاہور تا کراچی ڈبل ٹریک پر ٹرین چلنا شروع ہو جائیگی،سعد رفیق

دسمبر میں لاہور تا کراچی ڈبل ٹریک پر ٹرین چلنا شروع ہو جائیگی،سعد رفیق

لاہور(خبر نگار خصوصی) وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ وہ دورۂ ترکی کے دورا ن اکنامک کارپوریشن آرگنائزیشن (ای سی او) ٹرین کو ترکی تک لے جانے کے منصوبے پر عمل درآمد کے لیے بات کریں گے۔ کوئٹہ سے زاہدان (ایران) تک فریٹ ٹرین کا آغاز ہوچکا ہے جبکہ اِسے ترکی تک لے جانے کے لیے پاکستان ریلویز کی تیاریاں مکمل ہیں۔ انہوں نے یہ بات گزشتہ روز ریلوے ہیڈکوارٹر میں ریلوے کی 2سالہ کارکردگی اور آئندہ منصوبوں پر میڈیا بریفنگ میں بتائیں انہوں نے 30جون 2015تک کی رپورٹ پیش کی۔ وزیر ریلوے نے بتایا کہ پشاور سے جلال آباد تک ریلوے لائن کی فزیبلٹی اسٹڈی رواں مالی سال میں مکمل ہوجائے گی ، جبکہ چمن(پاکستان) سے سپن بولدک(افغانستان) تک لائن بچھانے کے لیے PC-1 کی منظوری بھی ہوچکی ہے، اس لائن کے ذریعے کوئٹہ سے قندھار اور ترکمانستان تک ریل رابطہ ممکن ہوجائے گا۔ کھوکھرا پار سے موناباؤ(انڈیا) کے تھرپارکر روٹ پر مال بردار گاڑی کے اجرا کا جائزہ بھی لیا جارہا ہے۔ اس روٹ پر پسنجر سروس چل رہی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری میں، کراچی پشاور’’مین لائن ون‘‘ کی اپ گریڈیشن اور ماڈرنائیزیشن کے لیے فزیبلٹی اسٹڈی اس سال مکمل ہوجائے گی ۔ اس سال دسمبر میں لاہور سے کراچی تک ڈبل ٹریک پر ٹرینوں کی آمدورفت کا آغاز ہوجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ مالی سال (2014-15)میں ریوینیو ٹارگٹ 28ارب روپے تھا، جبکہ ریلوے نے اس سے بڑھ کر 31ارب 92کروڑ روپے کمائے۔ رواں مالی سال کے لیے حکومت کی طرف سے ہمیں 32 ارب کا ٹارگٹ ملا ہے لیکن ہم اِسے 38ارب تک لے جائیں گے۔ 159مرمت طلب پُلوں میں سے 73پر کام مکمل ہوچکا ہے باقی کام اسی سال مکمل ہوئے گا۔ سندھ حکومت ریلوے کی زمینوں کو واگزا ر کرانے کے حوالے سے تعاون نہیں کر رہی۔ وزیر ریلوے نے بتایا کہ ریلوے پولیس کے لیے اینٹی ٹیررازم ٹریننگ کا اہتمام کیا گیا ہے جبکہ اے ایس آئی اور کانسٹیبلوں کی مزید بھرتیاں بھی کی جارہی ہیں۔ 20 انسپکٹرز کی بھرتی فیڈرل پبلک سروس کے ذریعے کی جائے گی۔ جبکہ ریلوے کے مختلف شعبوں کے لیے ضروری 1470 نئی بھرتیاں بھی کی جارہی ہیں۔

سعد رفیق

مزید : صفحہ آخر