سزائے موت کے مجرم کو راضی نامہ کے بیان حلفی پیش کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت

سزائے موت کے مجرم کو راضی نامہ کے بیان حلفی پیش کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت

لاہور(نامہ نگار خصوصی )سپریم کورٹ نے قتل کے مقدمہ میں سزائے موت پانے والے ظفر عرف ظفری کو مقتول کے بچوں اوردیگر ورثاء سے راضی نامہ کے بیان حلفی پیش کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت دے دی ۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار ، مسٹر جسٹس اعجاز احمد چودھری اور مسٹر جسٹس شیخ عظمت سعید پر مشتمل تین رکنی بنچ نے سزائے موت کے قیدی ظفر عرف ظفری کی راضی نامہ کی درخواست پر سماعت کی۔ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل نے بنچ کو آگاہ کیا کہ مقدمہ کی مدعیہ نے مجرم سے راضی نامہ کرنے سے انکار کیا تھا اب اس کی وفات کے بعد مجرم نے مقتول کمیر کے بچوں اور بیوہ سے راضی نامہ کر لیا ، جس پر عدالت نے د ر خو ا ست گزار کے وکیل کی استدعا پر مدعی مقدمہ کے بچوں کی جانب سے راضی نامہ کے بیان حلفی پیش کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت دے دی ۔

مہلت

مزید : صفحہ آخر