سُپر پاور امریکہ میں ہر سال16 ہزار افراد کو قتل کر دیا جاتا ہے ،رپورٹ

سُپر پاور امریکہ میں ہر سال16 ہزار افراد کو قتل کر دیا جاتا ہے ،رپورٹ

 واشنگٹن(اے این این) امریکہ میں پچھلے11سال کے دوران قتل کئے افراد کی تعداد پاکستان میں دہشتگردی کے واقعات میں مارے جانے والوں سے تقریباً تین گناہ زیادہ ہے،دنیاکی سب سے بڑی سپر پاور میں ہر سال16ہزار افراد کو قتل کر دیا جاتا ہے،ہرروز44افراد کو ابدیء نیند سلا دیا جاتا ہے،سب سے زیادہ متاثرہ سیاہ فام شہری ہیں،سالانہ ایک کروڑ بچوں کو بھی کسی نہ کسی طرح کے تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے،اس کے علاوہ ایک کروڑ 20لاکھ افراد تشدد کا نشانہ بنتے ہیں۔امریکی میڈیکل ایسوسی ایشن کی جانب سے جاری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 1980 سے 2013 کے مقابلے میں امریکا میں قتل کی وارداتوں میں نصف کی کمی ہوئی ہے لیکن اب بھی یہ شرح بلند ہے اور امریکا کے طول و عرض میں ہرروز 44 افراد قتل ہورہے ہیں۔ اس لحاظ سے امریکا میں ہر سال 16 ہزار افراد قتل ہورہے ہیں جس میں سب سے متاثر سیاہ فام ہورہے ہیں۔ 1980 کے عشرے میں فی ایک لاکھ افراد میں سے مرنے والوں کی تعداد 10.7 تھی جب کہ 2013 میں یہ شرح کم ہوکر 5.1 رہ گئی ہے لیکن اس سال بعض شہروں میں ہلاکتوں میں غیرمعمولی اضافہ ہوا۔ گزشتہ برس واشنگٹن میں 69 افراد قتل ہوئے تھے جب کہ رواں برس اب تک 87 افراد مارے جاچکے ہیں۔ اسی طرح بالٹی مور میں صرف جولائی میں 45 افراد قتل ہوئے جو ایک غیرمعمولی شرح ہے۔جرنل آف امریکن میڈیکل ایسوسی ایشن کے مطابق دیگر حملوں مثلا بچوں کو نظر انداز کرنے اور ان پر تشدد کے واقعات کی شرح کمی واقع ہوئی ہے۔ 1992 میں فی ایک لاکھ افراد میں 442 واقعات ہوئے تھے جب کہ 2012 میں فی ایک لاکھ میں 242 واقعات رپورٹ ہوئے۔ لیکن اب بھی یہ شرح بہت ذیادہ ہے یعنی سالانہ ایک کروڑ بچوں کو کسی نہ کسی طرح کے تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ ایک کروڑ 20 لاکھ افراد پر کسی نہ کسی طرح تشدد کیا جارہا ہے۔ ماہرین کے مطابق بچوں اور بڑوں کے ساتھ برا سلوک، تشدد اور ذیادتی سے ان کی جسمانی اور ذہنی صحت پر بہت مضر اثرات مرتب ہورہے ہیں۔امریکی میڈیکل ایسوسی ایشن کی اس رپورٹ کے تناسب سے گزشتہ11برسوں میں 1لاکھ76ہزار سے زائد افراد کو قتل کیا گیا ہے جبکہ آزاد میڈیا رپورٹ کے مطابق ان گیارہ برسوں میں پاکستان میں لڑی جانے والی دہشتگردی کے خلاف جنگ میں60ہزار افراد دہشتگردی کے واقعات میں مارے گئے۔اس تناسب سے پاکستان میں دہشتگردی سے جاں بحق افراد کے مقابلے میں امریکہ میں تقریباً تین گنا زائد افراد کو قتل کیا گیا اور ان میں بھی سیاہ فام امریکیوں کی تعداد زیادہ ہے۔پاکستان میں فرقہ وارانہ تشدد کو بھی دہشتگردی کے زمرے میں شامل کیا جاتا ہے جبکہ امریکہ میں سیاہ فام شہریوں کے قتل کو نسلی تعصب بھی تسلیم نہیں کیا جا رہا۔امریکہ میں چند برسوں کے دوران سیاہ فام شہریوں پر سفید فام امریکیوں اور سرکاری اہلکاروں کے تشدد کے رحجان میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

امریکہ

مزید : صفحہ آخر