پاکستان اور آئی ایم ایف میں3 سالہ توسیع فنڈز کی سہولت سے متعلق مذاکرات کامیاب

پاکستان اور آئی ایم ایف میں3 سالہ توسیع فنڈز کی سہولت سے متعلق مذاکرات کامیاب

 دبئی (آئی این پی) پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان 3 سالہ توسیعی فنڈز کی سہولت سے متعلق 8ویں جائزے کے مذاکرات کامیاب ہو گئے،آئی ایم ایف کاپاکستانی کی اقتصادی صورتحال پر ا طمینان کااظہارکیا ،آئی ایم ایف بورڈکی منظوری کے بعد پاکستان کو 51کروڑڈالر کی اگلی قسط مل جائے گی ، وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ پاکستان کے زر مبادلہ کے ذخائر ریکارڈ سطح پر آ گئے ہیں، مہنگائی 12سال کی کم ترین سطح پر آ گئی، دنیا مانتی ہے کہ پاکستان کے معاشی حالات بہتری کی طرف گامزن ہیں، اقتصادی راہداری بھی پاکستان کی معاشی صورتحال میں مزید بہتری کا باعث بنے گی، عالمی مارکیٹ میں تین کی قیمتوں میں کمی سے معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوئے، آئی ایم ایف کی طرف سے 9ویں قسط بورڈ کی منظوری کے بعد پاکستان کو ملے گی۔ جمعہ کو دبئی میں پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان آٹھویں جائزے کے مذاکرات مکمل ہو گئے ہیں،مذاکرات میں پاکستان کی نمائندگی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کی، آئی ایم ایف سے ہونے والے مذاکرات 3سالہ توسیعی فنڈز کی سہولت سے متعلق تھے۔ مذاکرات کے بعد وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے پچھلی سہ ماہی کے تمام اہداف حاصل کئے ہیں، اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی آئی ہے، ٹیکس محصولات میں 15فیصد اضافہ ہوا ہے، گزشتہ سال ترسیلات زر میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے، مالیاتی خسارہ 8.8 سے کم ہو کر5.3 پر آ گیا ہے، رواں مالی سال بجٹ خسارے کا ہدف4.3 مقرر کیا گیا ہے، ٹیکس ٹو جی ڈی پی شرح کو بڑھا کر 13 سے 15فیصد تک لے جائیں گے، پاکستان کے زر مبادلہ کے ذخائر ریکارڈ سطح پر آ گئے، مہنگائی بارہ سال کی کم ترین سطح پر آ گئی ہے، دنیا مانتی ہے کہ پاکستان کے معاشی حالات بہتری کی جانب جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تیل کی قیمتیں اور کموڈٹی قیمتوں میں کمی آنے سے جاری کھاتوں کا خسارہ کم ہوا۔ اقتصادی راہداری بھی پاکستان کی معاشی صورتحال میں مزید بہتری کا باعث بنے گی، عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں کمی سے معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوئے، ہمارا اور آئی ایم ایف کا اندازہ ہے کہ مہنگائی میں اضافہ ہو گا، آئی بی آر بی سمیت تمام عالمی ادارے پاکستان کے ساتھ کام کر رہے ہیں،9ویں قسط آئی ایم ایف بورڈ کی منظوری کے بعد پاکستان کو مل جائے گی۔

مزید : صفحہ آخر