یوم آزادی منفرد انداز میں منانے کی تیاریاں

یوم آزادی منفرد انداز میں منانے کی تیاریاں
 یوم آزادی منفرد انداز میں منانے کی تیاریاں

  

یوم آزادی ہمارے بزرگوں کی عظیم قربانیوں اورقیام پاکستان کی جدوجہد میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے گمنام مجاہدوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے علاوہ تجدید عہد اور پاکستان کو قائداعظم کے خوابوں کی تعبیر بنانے کے عزم کے اظہار کا دن بھی ہے۔ زندہ قومیں اپنے قومی دنوں کو دھوم دھام سے مناتی ہیں۔وزیر اعلیٰ شہباز شریف 23مارچ کی کامیاب تقریبات کی طرح 14اگست کایوم آزادی کا دن بھی شاندا ر طریقے سے منانے کے متمنی ہیں اور اس مقصد کیلیے انہوں نے ایک سٹئیرنگ کمیٹی تشکیل دے کر صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہود احمد کو اس کا چیئرمین بنایا ہے، جبکہ سیکرٹری انفارمیشن کمیٹی کے کنوینر ہیں۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت کے مطابق صوبائی حکومت نے اس سال 14اگست کو یوم آزادی شایان شان طریقے منانے کا پروگرام بنایا ہے ۔ یوم آزادی کی تقریبات یکم اگست سے ہی شروع ہو جائیں گی۔ یونین کونسل ، تحصیل ، ضلع اور صوبائی سطح پر سکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیز میں تقریری و تحریری مقابلے، سپورٹس اور سیمنارز، سمپوزیمز،مشاعرے، ملی ترانوں و مصوری کے مقابلے، قومی پرچم لہرانے اور قومی ترانہ پڑھنے کی تقاریب اور میڈیا پراس روز کی مناسبت سے خصوصی پروگرام نشر کیے جائیں گے۔جن میں تحریک پاکستان میں نمایاں کردار ادا کرنے والے مشاہیر کو خراج تحسین پیش کیا جائے گا۔ صوبائی دارالحکومت کی طرح ہر ضلع بھی اپنا فلوٹ تیار کرے گا۔اضلاع کی سطح پر مختلف شعبوں میں کارہائے نمایاں سرانجام دینے والے افراد کو سند فضیلت عطا کی جائیگی۔ یوم آزادی پر موجودہ حکومت کے ترقیاتی منصوبوں، عوام دوست اقدامات اور پالیسیوں سے بھی عوام کو آگاہ کیا جائے گا۔

اس سال یوم آزادی کے حوالے سے ہر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگ خصوصاًنوجوان طبقے کی بھرپور شرکت کو یقینی بنایا جائے گا۔ موقع کی مناسبت سے پنجاب حکومت کے تمام محکمے وطن سے محبت کے اظہار کے لئے خصوصی پروگرام کریں گے۔محکمہ آرکائیو تحریک پاکستان کے حوالے سے نادر تصاویر اور یادگار اشیا ء کی نمائش منعقد کرے گا۔ پبلک لائبریریز میں خصوصی تقاریب ہوں گی جن میں مطالعہ کاذوق و شوق رکھنے والے افراد کوسراہا جائے گااور انہیں کتابوں کے تحائف انعام کے طور پر دیے جائیں گے۔ ضلعی او ر ڈویژنل سطح پر تیا ر کیے جانے والے فلوٹس 4اگست تک نمائش کے لئے تیار کر لیے جائیں گے۔ یونین کونسل کی سطح پر نہ صرف قومی پرچم لہرائے جائیں گے، بلکہ ساتھ ہی ایک بڑے برقی فلیکس پر متعلقہ یونین کونسل میں ہونے والے ترقیاتی کاموں کا بھی ذکر ہوگا۔ یوم آزادی کی تقریبات میں جدوجہد آزادی میں حصہ لینے والی خواتین فاطمہ جناح، رعنا لیاقت علی خان ، شائستہ اکرام اللہ اور بیگم شاہنواز کو بھر پور خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔ان خواتین نے ہمارے مستقبل کے لئے اپنا آج قربان کر دیا۔پنجاب کے تمام محکموں نے یوم پاکستان کے حوالے سے کی گئی تیاریوں کے پلان سٹیئرنگ کمیٹی کے حوالے کر دیے ہیں۔ تمام محکمے راولپنڈی ، لاہور اور ملتان کے ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز سے اپنے تین تین فلوٹس جن پر یوم آزادی اور آزادی کے بعد ہونے والی ترقی کی جھلکیاں ہوں گی متعلقہ ڈویژنوں کے تمام شہروں اور قصبوں میں بھیجیں گے۔ یوم آزادی پر دیگر تمام صوبوں سے طالبعلموں اور میڈیا کے لوگوں کو لاہور بلا کر یوم آزادی کی تقریبات میں شرکت کا موقع دیا جائے گا۔اس اقدام کے مقصد یوم آزادی کے تاریخی موقع پر قومی اتحاد و یگانگت کو فروغ دینا اور نوجوان نسل میں آگے بڑھنے اور ترقی کی منازل طے کرنے کا مشترکہ جزبہ پروان چڑھانا ہے ۔دوسرے صوبوں کے نصابی اور غیر نصابی میدانوں کے ہائی اچیور طالبعلموں کے ساتھ ساتھ وہاں سے صحافیوں کو بھی پنجاب میں جشن آزادی کی تقریبات میں شرکت کے لئے بلایا جا رہا ہے ۔

اس سال پہلی دفعہ یوم پاکستان کی تمام تقریبات کا مشترکہ تھیم تیار کیا جا رہا ہے ۔یہ تھیم یوم آزادی کی تمام تقریبات کا مرکزی خیال ہو گا اور ہر بینر، پوسٹر ، اورفلیکس پر چسپاں ہو گا۔ اس سال نوجوانوں اور خواتین کی ترقی کے حوالے سے خصوصی پروگرام تقریبات کا نمایاں حصہ ہوں گے ۔ شاندار ثقافتی اور تفریحی پروگراموں کے علاوہ آزادی کے 69سال پورے ہونے پر قوم کو دعوت فکر بھی دی جائے گی کہ وہ یہ سوچیں کہ ہم نے آزادی کے بعد کے عرصہ میں کیا کھویا کیا پایا۔ اس مقصد کے لئے تمام شہروں بالخصوص یونیورسٹیوں میں قیام پاکستان کے اغراض و مقاصد اور ملکی مسائل کے حوالے سے فکری نشستیں بھی ہوں گی ۔تمام سرکاری و غیر سرکاری یونیورسٹیوں کی شراکت سے یوم پاکستان کے حوالے سے مرکزی سیمینار ایوانِ اقبال میں منعقد ہو گا۔ یوم آزادی پرپوسٹر کمپیٹیشن اور وال پینٹنگز کے مقابلے کرائے جائیں گے۔ان تمام ایونٹس کے موضوعات عدم انتہا پسندی، امید اور ترقی ہوں گے نیز تحریک پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام تقریری مقابلوں میں تحریک پاکستان کے بزرگوں اور نمایاں کارکردگی کی حامل شخصیات کو مہمان خصوصی بنایا جائے گا۔اس موقع پر تحریک پاکستان کے بزرگ کارکنوں کو میڈل دیے جائیں گے اور انہیں عزت و احترام اور قدر و منزلت کے مقامات پر جگہ دی جائے گی۔

یوم آزادی کے حوالے سے سکولوں، کالجوں کے طلباء محکمہ جنگلات کے تعاون سے پلانٹیشن ڈے منائیں گے بچے اپنے ناموں سے اپنے اداروں میں پودے لگائیں گے۔اس موقع پر دوسرے صوبوں کے ہائی اچیورز طلباء کو یوم پاکستان پر لاہور کی تقریبات میں مدعو کیا جائے گا۔یوم پاکستان پر حضوری باغ میں خصوصی تقریب ہو گی۔ پی ایچ اے مینار پاکستان سمیت پانچ مقامات پر فائر ورکس کرائے گی۔پنجاب آرٹس کونسل گرینڈ میوزیکل شو اور لینڈ سکیپ آف پاکستان مقابلے منعقد کرائے گی۔علاوہ ازیں چترالی فنکار الحمرا میں اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے۔ پنجاب بھر میں موجود کل 9آرٹس کونسلز اپنے اپنے شہروں میں واکس بھی منعقد کرائیں گی۔ یوم آزادی کے موقع پر پنجاب سپورٹس ڈیپارٹمنٹ ضلع اور صوبائی سطح پر 18 مختلف کھیلوں کے مقابلے منعقد کرائے گا۔ یوم آزادی کے حوالے سے باغ جناح میں کتابوں کی نمائش منعقد ہو گی اور تعلیمی ادارے آزادی واکس منعقد کریں گے۔اجلاس میں یوم آزادی پر خصوصی ٹریفک پلان اور ون ون ٹوٹو کے اہم کردار کا بھی تعین کیا گیا۔ یوم آزادی شایان شان طریقے سے منانے کے لئے صوبائی حکومت کے محکمے وفاقی حکومت کے اداروں سے بھرپور رابطے اور تعاون کے زریعے مشترکہ پروگرامز ترتیب دیے جائیں گے، تاکہ صوبائی اور وفاقی حکومتوں کے درمیان تال میل سے یوم آزادی کی تقریبات کو بھرپور انداز میں منایا جاسکے ۔

بحیثیت زندہ دل قوم ہمیں ہر طرح کا جشن مناتے ہوئے جشن کے تقاضوں کا بھی خیال رکھنا چاہیے۔ پچھلے دنوں ایسے ہی ایک تہوار پر لاہور کی سڑکوں پر درجنوں نوجوان خوشی سے دیوانے ہو کر ون ویلنگ کرتے ہوئے زخمی ہو گئے تھے اور بعض نے اپنی قیمتی جانوں کے نذرانے بھی اس شوق فضول کی نذر کیے تھے۔ یوم آزادی پر ہم ہر سال اپنے نوجوانوں کو بے قابو ہوتے دیکھتے اور کف افسوس ملتے ہیں کہ یہ اسی پاکستان کے نوجوان ہیں جس کا خواب قائد ا عظم اور اقبال نے اپنے لاکھوں مسلمان ساتھیوں کے ساتھ دیکھا تھا اورپھر اس خواب کی تکمیل کے لئے قوم کے بیٹوں کو جانیں اور بیٹیوں کوعزتیں تک لٹاناپڑیں۔ضرورت اس امر کی ہے کہ ہمارے نوجوا ن جو ہمارا مان اور فخر ہیں، جشن آزادی سمیت ہر جشن منانے کے آداب سیکھیں۔ خصوصاً ون ویلنگ جیسے خود نمائی اور چھچھورے پن کے شوق سے نوجوان اپنے آپ کو آزاد کر کے حقیقتاً اس امر کا ثبوت فراہم کریں کہ وہ ایک آزاد ، باوقار اور باشعور قوم کے فرزند اور اقبال اور قائد کی فکر کے حقیقی وارث ہیں۔

مزید :

کالم -