دنیا کی وہ جیل جہاں قید ہونے کیلئے لوگ خود پیسے دے کر جاتے ہیں، آخر اس میں ایسا کیا ہے کہ لوگ جرم کئے بغیر اپنے خرچ پر قید ہوجاتے ہیں؟جواب جان کر آپ کا بھی دل کرے گا ابھی پہنچ جائیں

دنیا کی وہ جیل جہاں قید ہونے کیلئے لوگ خود پیسے دے کر جاتے ہیں، آخر اس میں ...
دنیا کی وہ جیل جہاں قید ہونے کیلئے لوگ خود پیسے دے کر جاتے ہیں، آخر اس میں ایسا کیا ہے کہ لوگ جرم کئے بغیر اپنے خرچ پر قید ہوجاتے ہیں؟جواب جان کر آپ کا بھی دل کرے گا ابھی پہنچ جائیں

  



بنکاک(مانیٹرنگ ڈیسک) ہم میں سے اکثر دعا کرتے ہوں گے کہ اللہ ہمیں جیلوں سے محفوظ رکھے لیکن اگر آپ بغیر کوئی جرم کیے جیل میں قید ہونے کا تجربہ حاصل کرنا چاہتے ہیں تو اب تھائی لینڈ میں ایک ہوٹل نے لوگوں کو یہ موقع فراہم کر دیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق بنکاک میں ایک ہوٹل بنایا گیا ہے جو بالکل اصل جیلوں کی طرح ہے اور یہاں قیام کے لیے آنے والے مہمانوں کے ساتھ بالکل قیدیوں جیسا سلوک کیا جاتا ہے۔ اس ہوٹل کے کمرے جیل کے سیلز کی طرح سلاخوں سے بنے ہوئے ہیں جن کا سائز 8مربع فٹ ہے۔

وہ وقت آگیا جس کا ڈر تھا، دنیا کی شرمناک ترین چیز مارکیٹ میں فروخت کیلئے پیش کردی گئی

یہاں آنے والے مہمانوں کو قیدیوں جیساسیاہ دھاریوں والا سفید لباس دیا جاتا ہے اور انہیں کمرے کی چابی کی بجائے ”قیدی نمبر“ الاٹ کیا جاتا ہے۔یہ سب کچھ کرنے سے پہلے جیلوں میں نئے آنے والے قیدیوں کی طرح ان کی ایک تصویر بنائی جاتی ہے اور ریکارڈ میں رکھی جاتی ہے۔یہاں لوگوں کے لیے الگ الگ باتھ رومز کی بجائے جیلوں کی طرح ایک ہی باتھ روم ہے جسے سب لوگ استعمال کرتے ہیں۔ہوٹل کے اندر روشنی انتہائی کم ہوتی ہے اوربالخصوص رات کے وقت تو کرفیو کا سا سماں ہوتا ہے۔رپورٹ کے مطابق اس ہوٹل کا نام سوک سٹیشن (Sook Station)ہے اور یہاں ایک رات قیام کا کرایہ 30پاﺅنڈ (تقریباً 4100روپے) ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس