اسرائیل بھی عرب ملکوں کی راہ پر، الجزیرہ بند،صحافیوں کی ملک بدری کا فیصلہ

اسرائیل بھی عرب ملکوں کی راہ پر، الجزیرہ بند،صحافیوں کی ملک بدری کا فیصلہ

  



تل ابیب(این این آئی)اسرائیل ملک کے اندر قطر کے نشریاتی ادارے الجزیرہ کے دفاتر بند کرنا اور اس کے صحافیوں کے کاغذات منسوخ کرنا چاہتا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق وزیرِ اطلاعات ایوب کارا نے الزام لگایا کہ الجزیرہ دہشت گردی کی معاونت کرتا ہے اور کہا کہ اس کے انگریزی اور عربی دونوں چینل بند کر دیے جائیں گے،انہوں نے کہاکہ ان کے اس فیصلے کی بنیاد حال ہی میں کئی عرب ملکوں کی جانب سے الجزیرہ پر عائد کردہ پابندی ہے۔ ان عرب ملکوں کی قطر سے سفارتی کشیدگی عروج پر ہے۔کارا نے کہا کہ کیبل والوں نے نیٹ ورک کو بند کرنے سے اتفاق کر لیا ہے تاہم یروشلم میں واقع الجزیرہ کے دفتر کو بند کرنے کے لیے مزید قانون سازی کی ضرورت ہو گی۔انھوں نے ایک اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ الجزیرہ داعش، حماس، حزب اللہ اور ایران کا بنیادی آلہ کار بن گیا ہے۔ادھرنتن یاہو نے ٹوئٹر کے ذریعے کارا کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ انھوں نے میری ہدایات پر الجزیرہ کی اشتعال انگیزی روکنے کے لیے ٹھوس اقدامات اقدامات کیے۔نتن یاہو نے الجزیرہ پر الزام لگایا کہ اس نے حال ہی میں یروشلم میں حرم الشریف میں سکیورٹی گیٹ لگانے کے معاملے پر اٹھ کھڑے ہونے والے تنازعے کو ہوا دی تھی۔دوسری جانب قطر کے دارالحکومت دوحہ میں الجزیرہ کے ایک عہدے دار نے خبررساں ادارے کو بتایا کہ چینل 'اس ریاست کی جانب سے اس عمل پر متاسف ہے جو اپنے آپ کو مشرقِ وسطیٰ کی واحد جمہوری ریاست کہتا ہے۔

' انھوں نے کہا کہ جو اسرائیل نے کیا وہ 'خطرناک' ہے۔

مزید : عالمی منظر