تحریک پاکستان میں پیر عبد الر حمان بھر چونڈی کا کردار ناقابل فراموش ہے : پیر عبد الخالق قادری

تحریک پاکستان میں پیر عبد الر حمان بھر چونڈی کا کردار ناقابل فراموش ہے : پیر ...

  



لاہور (پ ر) تحریک پاکستان ایک روحانی تحریک تھی اور اس تحریک میں علماء ومشائخ نے بھرپور حصہ لیا تھا۔ پیر عبدالرحمن بھرچونڈیؒ کی تحریک پاکستان میں خدمات ناقابل فراموش ہیں ۔قائداعظمؒ ،پیر عبدالرحمن بھرچونڈیؒ پر نہایت درجہ اعتماد اور سندھ کے سیاسی احوال پر ہمیشہ ان سے مشاورت کرتے تھے۔صوبہ سندھ کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ اس صوبہ کی اسمبلی نے سب سے پہلے پاکستان سے الحاق کی قرارداد منظور کی تھی۔ علماء ومشائخ نے قربانیاں دے کر یہ ملک بنایاتھا اب اس کو مستحکم کرنے کیلئے بھی اپنا کردار ادا کریں۔ اسلام کے نام پر قائم ہونیوالا یہ ملک تاقیامت قائم و دائم رہے گا۔ ان خیالات کااظہار مقررین نے خانقاہ عالیہ قادریہ بھرچونڈی شریف ،ڈھرکی (سندھ) میں تحریک پاکستان میں علماء مشائخ کے مجاہدانہ کردار اور شہدائے تحریک پاکستان کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے منعقدہ ’’پاکستان پائندہ باد کانفرنس ‘‘کے دوران کیا۔ کانفرنس کا اہتمام نظریۂ پاکستان فورم گھوٹکی نے کیا تھا۔ اس کانفرنس کی صدارت سجادہ نشین خانقاہ عالیہ قادریہ بھرچونڈی شریف و امیر مرکزی جماعت اہل سنت پاکستان پیر عبدالخالق قادری نے کی جبکہ سیکرٹری نظریۂ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید مہمان خاص تھے۔اس موقع پر صدر جمعیت علمائے پاکستان (سندھ) مفتی محمد ابراہیم قادری، میاں عبدالمالک قادری، علامہ عبدالمجید قادری، جام عبدالفتح ایڈووکیٹ، پروفیسر غلام رسول اکرم، پروفیسر محمد اسماعیل، سید احسان احمد گیلانی، علماء ومشائخ سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کثیر تعداد میں موجود تھے ۔ تحریک پاکستان کے مخلص کارکن ،سابق صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان و چیئرمین نظریۂ پاکستان ٹرسٹ محمد رفیق تارڑ نے کانفرنس کے شرکاء کے نام اپنے خصوصی پیغام میں باب الاسلام سندھ کی اہم خانقاہ بھرچونڈی شریف کے زیرِ اہتمام پاکستان پائندہ باد کانفرنس کے انعقاد پر مبارکباد پیش کی اور کہا کہ تحریک پاکستان ایک روحانی تحریک تھی اور اس تحریک میں علماء ومشائخ نے بھرپور حصہ لیا تھا۔یہ انہی علماء ومشائخ کی کاوشوں کا نتیجہ تھا کہ مسلمانان برصغیر فرقہ ورانہ اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر قیام پاکستان کی جدوجہد میں متحد ہو گئے۔ تحریک پاکستان میں پیر عبدالرحمن بھرچونڈیؒ کی گرانقدر خدمات کو فراموش نہیں کی جا سکتا ہے۔آپ نے مسلم لیگ کی بھرپور اعانت کی اور قائداعظمؒ کا علمی طور پر ساتھ دیا۔آپ نے صوبہ سندھ میں مسلم لیگ کو مضبوط ومنظم کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔ پیر عبدالخالق قادری نے کہا کہ ہمارے آباواجداد نے تحریک پاکستان میں بھرپور حصہ لیا تھا ۔ یہ ملک دوقومی نظریہ کی بنیاد پر قائم ہوا اور تاقیامت قائم ودائم رہے گا۔انہوں نے کہا کہ نظریۂ پاکستان فورم گھوٹکی کے زیر اہتمام ہم صوبہ سندھ میں ہر جگہ نظریۂ پاکستان کا پیغام اسی جذبے سے لوگوں تک پہنچائیں گے جس طرح ہمارے بزرگوں نے تحریک پاکستان کے دوران قائداعظمؒ اور مسلم لیگ کا پیغام پہنچایا تھا۔ انہوں نے کہا اس سال 70واں یوم آزادی بھرپور جوش وجذبے سے منایا جائے گا، انہوں نے اپنے مریدین کو ہدایت کی ہر ایک اپنے گھر میں قومی پرچم لہرائے اور چراغاں کیا جائے۔شاہد رشید نے کہا کہ تحریک پاکستان کو کامیابی سے ہمکنار کروانے میں علماء ومشائخ کا کردار کسی سے پوشیدہ نہیں ہے۔ قیام پاکستان کا مقصد ایک ایسا مثالی اسلامی معاشرہ تشکیل دینا تھا جو پوری دنیا کیلئے ایک نمونہ ہو۔ حصول پاکستان کی جدوجہد میں خانقاہ عالیہ بھرچونڈی شریف کے کردار کو کسی طور پر نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ۔ پیر عبدالرحمن بھرچونڈیؒ نے اپنے شب وروز پاکستان کیلئے وقف کر رکھے تھے اور آپ نے اس دوران چلنے والی تمام اہم تحریکوں میں نمایاں حصہ لیا۔ صوبہ سندھ میں کانگریس کا زور توڑنے اور مسلم لیگ کو مضبوط بنانے میں آپ کا کردار کلیدی تھا۔ انہوں نے کہا کہ نظرےۂ پاکستان ٹرسٹ ایک قومی‘ فکری اور نظریاتی ادارہ ہے جس کے قیام کا مقصد قراردادِ لاہور کی روح کے مطابق دوسروں پر انحصار کی بجائے اپنی اجتماعی کوششوں سے مملکتِ خداداد پاکستان کی جغرافیائی اور نظریاتی سرحدوں کی حفاظت اور تکمیل کرنا ہے اور تحریک پاکستان کی جدوجہد میں کارفرما جذبوں اور ولولوں کو بروئے کار لاتے ہوئے پاکستان کو مستحکم سے مستحکم تر کرنا ہے۔مفتی محمد ابراہیم نے کہا کہ تحریک پاکستان کے دوران علماء ومشائخ نے اپنا بھرپور کردار ادا کیا ۔ مشائخ عظام خانقاہوں سے نکل کر عملی میدان میں آئے اور اپنے مریدین کو حکم دیا کہ وہ قائداعظمؒ کا ساتھ اور مسلم لیگ کو ووٹ دیں۔ پاکستان کا قیام دو قومی نظریہ کی بنیاد پر عمل میں آیا اور اس تحریک کے دوران ’’پاکستان کا مطلب کیا ۔۔۔ لا الہٰ الا اللہ‘‘ کا نعرہ زبان زد عام تھا۔1946ء میں بنارس میں منعقدہ آل انڈیا سنی کانفرنس نے تحریک پاکستان کو مہمیز دی۔ بھرچونڈہ شریف کے پیر عبدالرحمن بھرچونڈیؒ نے اس کانفرنس میں صوبہ سندھ کی بھرپور نمائندگی کی۔ آپ کو قائداعظمؒ کا بھرپور اعتماد حاصل تھا، آپ نے صوبہ سندھ میں مسلم لیگ کو مضبوط و منظم کرنے میں اہم کردار ادا کیا ۔ انہوں نے کہا کہ علماء و مشائخ نے جس طرح تحریک پاکستان میں حصہ لیا اسی طرح استحکام پاکستان میں بھی اپنا کردار ادا کررہے ہیں اور کرتے رہیں گے۔ یہ ملک انشاء اللہ تا قیامت قائم ودائم رہے گا۔ پاکستان پائندہ باد کانفرنس کے موقع پر بھرچونڈی شریف میں نظریۂ پاکستان فورم کا قیام بھی عمل میں آیا۔نظریۂ پاکستان فورم گھوٹکی کے عہدیداران میں پیر عبدالخالق القادری (سرپرست اعلیٰ)، میاں عبدالمالک القادری(صدر)، جام عبدالفتح ایڈووکیٹ( نائب صدر)، میاں عبدالمطلب قادری (نائب صدر)، مولانا عبدالمجید قادری(جنرل سیکرٹری)، حافظ غلام رسول( جوائنٹ سیکرٹری)، ڈاکٹر اللہ وسایو سومرو(جوائنٹ سیکرٹری) اور زاہد حسین (فنانس سیکرٹری) شامل ہیں۔

بھرچونڈی

مزید : علاقائی


loading...