مارچ میں سرکاری وسائل استعمال

مارچ میں سرکاری وسائل استعمال
 مارچ میں سرکاری وسائل استعمال

  



اسلام آباد(اے این این ) رہنما تحریک انصاف بابر اعوان نے کہا ہے کہ نواز شریف کا احتجاج کس کے خلاف ہو گا لہذا نواز شریف شیر بنیں اور نام لیں کہ احتجاج کس کے خلاف کریں گے۔سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں رہنما تحریک انصاف بابر اعوان کا کہنا تھا کہ ملک میں بہت سے سابق وزرائے اعظم موجود ہیں لیکن پروٹوکول میں فرق ہے، جو شخص کہتا تھا کہ عوام سے خطرہ ہے اب سڑکوں پر ہے، مودی کے یار کو دھکا لگا اور جی ٹی روڈ پر پہنچ گیا،نواز شریف کے مارچ پر سرکاری وسائل استعمال ہو رہے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ نااہل وزیراعظم کو بتانا چاہتاہوں کہ معافی نامہ نہیں جب کہ اس بار جدہ کا راستہ نہیں بلکہ اڈیالہ جیل جانا ہے۔بابر اعوان نے کہا کہ چند سو آدمی مری سے بارہ کہو تک اکٹھے ہوئے لیکن 7000اہلکار لگائے گئے، مودی کومشرقی اور مغربی جاتی امراسے ریلیف مل رہاہے جب کہ پنجاب کے گاڈ فادر 2 اورایل این جی کو وارن کرناچاہتے ہیں اگر کچھ ہوا تو ذمہ دار ہوں گے، نواز شریف کے مارچ سے ہر ضلع کو ایک ایک ارب کا نقصان ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ نااہل شخص پارٹی ہیڈ نہیں رہ سکتا جب کہ نواز نہیں رہا تومسلم لیگ نواز کیسے، ریفرنس 4 ہفتے میں فائل نہ ہوا تو توہین عدالت ہوگی جب کہ والیم 10جب کھلا تو مودی کے یاروں کو بڑادھچکہ لگے گا۔رہنما تحریک انصاف نے کہا کہ پٹواری، کلرک جس کے خلاف ریفرنس ہواس کی گرفتاری ہوتی ہے،اگر ایف آئی اے کام نہیں کرے گی تو کام کسی اور ایجنسی کو دیناپڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ ضرب عضب سے امن قائم ہوا لیکن نواز شریف ضرب غضب سے امن تباہ کرناچاہتے ہیں، نواز شریف کا احتجاج کس کے خلاف ہو گا، کیا اپنے بھائی کی حکومت کے احتجاج کیا جائے گا لہذا نواز شریف شیر بنیں اور نام لیں کہ احتجاج کس کے خلاف کریں گے۔ این اے 120 میں ضمنی الیکشن کے حوالے سے بابر اعوان نے کہا اگر الیکشن میں انتخابی فہرستیں درست ہوئی اور پولنگ ٹھیک ہوئی تو یاسیمین راشد شہباز شریف کو دو تہائی اکثریت سے شکست دیں گی۔

بابر اعوان

مزید : صفحہ اول


loading...