نواز شریف کی آمد ، سخت سکیورٹی میں قافلہ 72گھنٹوں میں لاہور پہنچے گا ، سکیورٹی انتظامات مکمل

نواز شریف کی آمد ، سخت سکیورٹی میں قافلہ 72گھنٹوں میں لاہور پہنچے گا ، ...

  



لاہور،اسلام آباد(کرا ئم رپورٹراے این این ،آن لائن)محکمہ داخلہ پنجاب نے مسلم لیگ (ن)کی اسلام آباد سے لاہور تک ریلی کے دوران قیام امن کیلئے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو بلٹ پروف گاڑی میں لے جانے ، ریلی کو جلد منزل تک پہنچانے اور راستے میں گڑ بڑ سے نمٹنے کی حکمت عملی سمیت تمام تر انتظامات کو حتمی شکل دے دی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم نواز شریف کی اسلام آباد سے لاہور روانگی کے حوالے سے تمام تر حکمت عملی تیار کرلی گئی ہے۔سابق وزیراعظم نواز شریف 9 اگست کو اسلام آباد کے پنجاب ہاؤس سے ریلی کی شکل میں لاہور میں واقع اپنی رہائش گاہ تک جائیں گے جب کہ اس حوالے سے قانون نافذ کرنے والے اداروں نے انتظامات مکمل کرلئے ہیں۔ذرائع محکمہ داخلہ پنجاب کا کہنا ہے کہ ریلی انتظامات کو حتمی شکل دینے کے لئے صوبائی محکمہ داخلہ کے حکام نے مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں سے رابطہ کیا اور سابق وزیراعظم کی لاہور آمد کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا۔ذرائع محکمہ داخلہ کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کو بلٹ پروف گاڑی میں لاہور لایا جائے گا اور سیکیورٹی کلیئرنس کے بعد انہیں گاڑی سے باہر نکلنے کی اجازت ہوگی۔صوبائی محکمہ داخلہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ ریلی کے راستے میں بازار بند رکھے جائیں گے اور پولیس کے مسلح اہلکار اور نشانہ باز چھتوں پر تعینات ہوں گے۔ذرائع کے مطابق جی ٹی روڈ پر واقع تحریک انصاف کے دفاتر کو بند رکھا جائے گا اور پی ٹی آئی رہنماں سے ریلی کے راستے میں گڑ بڑ نہ کرنے کی یقین دہانی لی جائے گی جب کہ مسلم لیگ(ن) کی ریلی کو جلد منزل پر پہنچانے کی کوشش کی جائے گی۔دوسری جانب ذرائع مسلم لیگ(ن) کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کے قافلے کو اسلام آباد سے 72 گھنٹے میں لاہور پہنچایا جائے گا۔ذرائع کے مطابق سابق وزیر اعظم کی پنجاب ہاؤس میں پارٹی رہنماؤں اور اہم شخصیات سے ملاقاتوں کا سلسلہ جاری ہے اور انھیں کاررواں کی تیاریوں سے متعلق مسلسل آگاہ رکھا جا رہا ہے۔پیر کو وزیر داخلہ احسن اقبال،انوشہ رحمان ،پرویز رشید اور دیگر رہنماؤں نے نواز شریف سے ملاقات کی اور انھیں ریلی کی تیاریوں کے حوالے سے آگاہ کیا۔ذرائع کے مطابق پنجاب ہاؤس اسلام آباد سے قافلہ نکلے گا اور راولپنڈی سے ہوتا ہوا لاہور پہنچے گا، نواز شریف لاہور میں داتا دربار بھی جائیں گے۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف قافلے کی صورت میں پنجاب ہاؤس سے ڈی چوک جائیں گے۔ ڈی چوک سے کارواں بلیو ایریا سے ہوتا ہوا زیرو پوائنٹ اور فیض آباد پہنچے گا۔فیض آباد سے نواز شریف کا کارواں مری روڈ سے راولپنڈی میں داخل ہو گا۔ نواز شریف کا قافلہ مری روڈ سے گزرتا ہوا راولپنڈی کچہری اور پھر روات جائے گا۔ روات سے نواز شریف قافلے سمیت بذریعہ جی ٹی روڈ لاہور پہنچیں گے۔ نواز شریف لاہور میں داتا دربار بھی جائیں گے۔مسلم لیگ(ن) نے روٹ پلان کو حتمی شکل دے دی ہے اور پارٹی رہنماؤں کو ٹاسک بھی دے دیا گیا ہے ۔ادھر نوازشریف کے استقبال کے لیے لاہور میں مال روڈ کو تعریفی بینرز اور فلیکسز سے بھر دیا گیا۔ سابق وزیراعظم نواز شریف کے استقبال کی تیاریاں زورو شور پر ہیں۔ مال روڈ پر جگہ جگہ نواز شریف کے حق میں بینرز اور فلیکسز آویزاں کر دئیے گئے جن پر نوازشریف کے حق میں تعریفی نعرے درج ہیں جن پر ہمارا لیڈر نوازشریف۔ ہم صادق ہیں ہم امین ہیں، ہم نواز شریف ہیں کے نعرے درج ہیں۔ دوسری طرف ذرائع نے بتایا کہ جی ٹی روڈ پر واقعہ تحریک انصاف کے دفاتر ریلی کے دوران بند رکھے جائیں گے اور راستے میں گڑ بڑ کرنے والوں کے خلاف تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی تاکہ کسی بھی صورت بدامنی اور انتشار نہ پھیلے اور جمہوری روایات کی پاسداری سمیت قانون کی عملداری کو یقینی بنایا جا سکے ۔

مزید : صفحہ اول


loading...