وزیر قانون سندھ کونیب کے سامنے پیش ہو کربیان ریکارڈ کرانے کا حکم

وزیر قانون سندھ کونیب کے سامنے پیش ہو کربیان ریکارڈ کرانے کا حکم

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)کرپشن اور اختیارات کے ناجائزاستعمال پر سندھ ہائی کورٹ نے سندھ کے وزیرقانون ضیاء الحسن لنجارکو نیب کے سامنے پیش ہو کربیان ریکارڈ کرانے کاحکم دیتے ہوئے سماعت 5ستمبرتک ملتوی کردی ہے۔عدالت نے حکم نامے میں کہاہے کہ تفتیش میں تعاون نہ کرنے پر عبوری ضمانت منسوخ کردی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں پیرکو سندھ کے وزیر قانون اور جیل خانہ جات ضیاء الحسن لنجار کی درخواست ضمانت کی سماعت ہوئی۔سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس کے کے آغا نے کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کے روبرو اپنے بیان میں بتایا کہ ضیاء لنجار کے خلاف کرپشن کے سنگین الزامات ہیں۔انہیں بیان ریکارڈ کرانے کے لئے طلب کیا گیا مگر وہ پیش نہیں ہوتے اور نہ ہی تفتیش میں تعاون نہیں کررہے ہیں، جس پر جسٹس کے کے آغا نے ضیاء لنجار کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ اگر آپ نیب سے تعاون نہیں کریں گے تو ضمانت منسوخ کری جائے گی۔عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ضیا لنجار آپ کو معلوم ہے کہ آپ عبوری ضمانت پر ہیں، ضمانت حاصل کرنے کا مطلب یہ ہے کہ آپ تحقیقات میں تعاون نہ کریں۔ اس موقع پر جسٹس کے کے آغا نے کہا کہ آپ نے بیان ریکارڈ نہ کرایا تو آپ کی عبوری ضمانت ختم کردی جائے گی۔عدالت نے ضیالنجاز کو نیب کے پاس جاکر بیان ریکارڈ کرانے کا حکم دیتے ہوئے نیب سے تین ہفتوں میں پیش رفت رپورٹ طلب کرلی اور سماعت 5 ستمبر تک ملتوی کردی۔

مزید : کراچی صفحہ اول