ہزاروں اضافی یونٹوں کے غلط ایوریج بل میپکو نے 6لاکھ صارفین پر بجلی گرا دی

ہزاروں اضافی یونٹوں کے غلط ایوریج بل میپکو نے 6لاکھ صارفین پر بجلی گرا دی

  



ملتان ( اعجاز مرتضیٰ سے ) میپکو ریجن میں 6لاکھ سے زائد صارفین کو ہزاروں روپے کے زائدناجائز ایوریج بل بھجوادئیے گئے ۔ ٹھیک میٹروں پر بھی ایوریج چارج کر دی گئی ۔صارفین میپکو دفاتر کے چکر پر چکرلگا کر تھک گئے ‘افسران نے دادرسی کرنے کی بجائے متاثرین کے کنکشن منقطع کرکے میٹر (بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

اتروالئے۔ ایکسین دفاتر میں بل ریوائزکے لیٹرز کے انبار لگ گئے ۔بتایا گیا ہے کہ میپکو ریجن میں 6لاکھ سے زائد بجلی صارفین کو ناجائز طور پر ایوریج بل بھجوا دئیے گئے ہیں جن میں ہزاروں روپے اضافی شامل ہیں ۔ ہر بارش میں ہزاروں میٹر جل جاتے ہیں ۔ اس کے علاوہ لا تعداد میٹر پہلے ہی خراب ہو چکے ہیں ۔ ان میٹروں کو تبدیل کرنے کی بجائے ہزاروں روپے کے زائد ایوریج بل بھجوا ئے جا رہے ہیں ۔ جن صارفین کا بل 2سے 5ہزار روپے آتا ہے ۔انہیں 10سے 20ہزار روپے اور اس سے بھی زائد کے ایوریج بل بھجوائے جا رہے ہیں ۔متاثرہ صارفین میپکو دفاتر کے چکر پر چکر لگا کر ہلکان ہو رہے ہیں مگر ان کی دادرسی نہیں ہو رہی ۔ الٹامیپکو افسران نے متاثرہ صارفین کے کنکشن منقطع کراکر میٹر اتروالئے ہیں ۔ صارفین سے کہا جاتا ہے کہ درخواستیں دینے سے کچھ نہیں ہوگا ۔ اس لئے بل ادا کردو’یا اقساط کروالو وگرنہ کنکشن کاٹ دیاجائے گا ۔صارفین مجبوراً ناجائز بھاری بل کی ادائیگی پر مجبور ہو چکے ہیں ۔صارفین نے میٹر ریڈرز کے خلاف شکایات کے انبار لگا دئیے ہیں ۔ میٹر ریڈرز کے خلاف شکایات ہیں کہ وہ صارفین کے ساتھ مک مکا کی کوشش کرتے ہیں جو صارفین رشوت دے دیں تو ان کو بہت کم ایوریج بل بھجوائے جاتے ہیں یا میٹر تبدیل کر دیا جاتا ہے جو صارفین رشوت نہ دیں ان کو بھاری ناجائز ایوریج کے بل بھجوادئیے جاتے ہیں ۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ بیشتر ایسے صارفین کو بھی ناجائز ایوریج بل بھجوا دئیے گئے جن کے میٹر ٹھیک ہیں ۔ کنکشن کاٹنے کی دھمکیاں دے کر صارفین کو ناجائز بل کی ادائیگی کے لئے مجبور کیاجارہا ہے ۔مشاہدے میں آیا ہے کہ بیشتر صارفین کو ناجائز ایوریج بل بھجوائے گئے جو انہوں نے مجبوراً جمع کر ادئیے لیکن جب مذکورہ صارفین نے میٹر تبدیل کرنے پر اصرار کیا تو انہیں ایس ڈی اوز کی طرف سے کہا گیا کہ پہلے میٹر چیک کرا لیتے ہیں ۔اگر خراب ہوا تو تبدیل کرائیں گے وگرنہ اسے ہی رہنے دیں گے ۔ ملتان سمیت میپکو ریجن میں 6لاکھ سے زائد صارفین کوہزاروں روپے کے زائد ایوریج بل بھجوادئیے گئے ہیں ۔ صارفین سے کہا جاتا ہے کہ ’’تمہار لوڈچیک کیا گیا ہے اس کے مطابق ایوریج ڈالی گئی ہے‘اس پر صارفین کہتے ہیں کہ ہمیں ایوریج بل نہ بھجوائیں بلکہ ہمارا میٹر ہی تبدیل کرادیں تاکہ ہم حقیقی بل ادا کریں تو میپکو افسروں واہلکاروں کا کہنا ہوتا ہے کہ میٹر دستیاب نہیں ہیں ۔ اس لئے ایوریج بل برداشت کرنا ہوں گے ۔ اس صورتحال پرصارفین سراپا احتجاج ہیں ۔ انہوں نے کہا ہے کہ میپکو کے حکام صورتحال کی بہتری کی باتیں کرتے ہیں مگر یہاں یہ صورتحال ہے کہ صارفین کو ایوریج بلوں کی آڑ میں تنگ اور پریشان کیاجا رہا ہے ۔ بجلی چوری سے ہونے والا نقصان بے گناہ صارفین کو بھاری ایوریج بل دے کر پورا کیا جارہا ہے ۔انہوں نے وزارت پانی وبجلی کے حکام اور میپکو کے چیف ایگزیکٹو آفیسرسے صورتحال کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے ۔واضح ہو کہ ایوریج بل کی تصحیح کرانا انتہائی مشکل ترین مرحلہ ہے ۔ اس کے لئے پہلے ایس ڈی او متعلقہ ایکسین کو اس بارے میں لیٹر بھجواتا ہے اور پھر ایکسین چیک کرکے اس کی منظوری دیتا ہے تو پھر ریونیوآفیسر نیا بل جاری کرتا ہے ۔ اس سارے عمل میں صارفین کو در بدر کے دھکے کھانے پڑتے ہیں کبھی ایس ڈی او اور کبھی ایکسین سیٹ پر نہیں ملتا ۔بمشکل بل درست ہوتا بھی ہوتا ہے تو وہ پھردوبارہ لگ کر آجاتا ہے ۔ صارفین کا چھٹکارہ رشوت دے کر ہی ہوتا ہے۔دریں اثناء میپکو کے میٹر انسپکٹرز ‘ میٹر سپر وائزرزاور میٹر ریڈرز نے ڈیڈ میٹروں کو کمائی کا ذریعہ بنالیا ۔ ایسے کنکشن والے صارفین کے ساتھ مک مکا کی پیش کش کی جاتی ہے اور رشوت دینے والے صارفین سے کہا جاتا ہے کہ جتنے مرضی ائر کنڈیشنڈ چلاؤ ‘ جتنا بھی لوڈ چاہے ڈال دو‘ منتھلی طے کرنے کی صورت میں بہت کم ایوریج بل بھجوایا جائے گا ‘ اس طرح رشوت دینے والے صارفین کو بجلی چوری کرائی جا رہی ہے ۔ اس حوالے سے سرویلنس ٹیمیں ناکام ہو کر رہ گئی ہیں ۔دریں اثناء میپکو کے حکام کا کہنا ہے کہ صارفین کے خراب و جلے ہوئے میٹر تبدیل کئے جا رہے ہیں جبکہ ناجائز ایوریج ڈالنے والے میپکو اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی جا تی ہے جن صارفین کو شکایات ہیں کہ انہیں عملہ ناجائز ایوریج بل بھجوا رہا ہے تو وہ ایس ڈی او ‘ ایکسین ‘ایس ای سے رابط کرسکتے ہیں ۔ ان کی فوری طور پر دادرسی کی جائے گی ۔

ایوریج بل

مزید : ملتان صفحہ آخر