جیل میں 2سال رہا ،6ماہ نواز شریف کے ساتھ گزارے ، مشرف نے مفروضوں پر مقدمات قائم کئے: شاہد خاقان عباسی

جیل میں 2سال رہا ،6ماہ نواز شریف کے ساتھ گزارے ، مشرف نے مفروضوں پر مقدمات ...
جیل میں 2سال رہا ،6ماہ نواز شریف کے ساتھ گزارے ، مشرف نے مفروضوں پر مقدمات قائم کئے: شاہد خاقان عباسی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ مشرف نے جب سابق وزیر اعظم نواز شریف کو اقتدار سے الگ کیا تو ہمیں گرفتار کیا گیا اور کافی مدت تک فوج کی حراست میں رکھا گیا بعد ازاں 6افراد کو جیل میں منتقل کردیا گیا ،جیل کے اندر ایک چھوٹی جیل تھی جس کے اندر 10بیرکیں تھی میں بیرک نمبر7میں تھا جبکہ نواز شریف تیسری بیرک میں تھے، مجھے 2سال تک قید رکھا گیا اور نواز شریف نے6ماہ میرے ساتھ گزارے ، ہم پر الزام تھا کہ جس جہاز پر مشرف سفر کر رہا تھا اس کے پائلٹ کو ہم نے حکم دیا تھا کہ تم انڈیا چلے جاﺅ یا جہاز کو زمین پر مار دو مگر سارا مقدمہ محض مفروضوں کی بنیاد پر قائم تھا۔

آئین کے آرٹیکل62ون ایف میں ترمیم کے لئے قومی اسمبلی میں بل لایا جائے گا، منتخب وزیر اعظم کے خلاف سازش پاکستان کی ترقی کے خلاف ’’سازش ‘‘ہے: شاہد خاقان عباسی

نجی ٹی وی کے پروگرام ”کیپیٹل ٹاک“ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے ساتھ ہم6لوگوں پر مشرف طیارے کی ہائی جیکنگ کا مقدمہ تھا، سارا مقدمہ مفروضوں کی بنیاد پر تیار کیا گیا تھا ، لیکن اس وقت کے جج رحمت حسین جعفری نے مشرف کے سامنے جھکنے سے انکار کیا اور کہا کہ آپ لوگ ثبوت پیش نہیں کر رہے، اس کے بعد مشرف کے ساتھیوں نے مجھے اور غوث علی شاہ سے کہا کہ آپ لوگ بیان دے دیں گے وزیر اعظم نے آپ کو ایسا کرنے کے لئے ٹیلی فون کیا لیکن میں نے کہا کہ وہ میرے دوست اور قائد ہیں ، ہماری تربیت ایسی ہے کہ ہم دوستوں کے ساتھ دھوکا نہیں کرسکتے ، جسٹس رحمت حسین جعفری نے مقدمے میں نواز شریف کو عمر قید سنائی اور دیگر افراد کو بری کردیا میں یہ سمجھتا ہوں کہ نواز شریف کو دعائیں ہیں یہی وجہ ہے کہ ان کے کسی بھی ساتھی نے انہیں تنہا نہیں چھوڑا۔

مزید : قومی