کھالیں جمع کرنے پر پابند ی‘ مدارس کو بلاجواز تنگ کیا جا رہا ہے‘ علماء

کھالیں جمع کرنے پر پابند ی‘ مدارس کو بلاجواز تنگ کیا جا رہا ہے‘ علماء

ملتان (سٹی رپورٹر)دینی مدارس پر کھالوں کی پابندی اتحاد تنظیمات مدارس کا ردعمل اسلام آباد /لاہور / کراچی ملک کے طول وعرض میں پھیلے ہزاروں مدارس کے متفقہ فورم تنظیمات (بقیہ نمبر63صفحہ12پر)

مدارس پاکستان کے مرکزی قائدین مولاناڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر مفتی منیب الرحمان مولانا عبدالمالک پروفیسر ساجد میر علامہ ریاض حسین نجفی مولانا محمد حنیف جالندھری صاحبزادہ عبدالمصطفی ھزاروی مولانا یاسین ظفر مولانا افضل حیدری اورڈاکٹر عطائالرحمان نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کھاھے کہ دینی مدارس نے ہمیشہ استحکام پاکستان کیلئے بے لوث اور لا زوال کردار ادا کیاہے۔حکومت کی طرف سے ہونے والے تمام معاہدوں کا پا س کیا مگر افسوس ناک امر یہ ہے کہ حکومت کی طرف سے ایک بار پھر غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے،ان کا کہنا تھا کہ اہل مدارس کو بلا جواز تنگ کیا جا رہا ہے۔ صوبہ پنجاب سندھ بالخصوص کراچی میں قربانی کی کھالیں جمع کرنے کے حوالے سے  حکومتی یقین دہانیاں دھری کی دھری رہ گئیں، کئی علاقوں میں دینی مدارس کو قربانی کی کھالیں جمع کرنے سے روکا جا رہا ہے، بہت سے اداروں کواین اوسی جاری نہ کرکے مشکلات کھڑی کی جارہی ہیں۔ اتحاد تنظیمات مدارس کے قائدین نے کہا کہ کئی مقا مات پر NOC کے لے ٹال مٹول سے کام لیتے ہوئے حسب سابق عید کی چھٹیوں تک معلق رکھتے ہوئے آخری وقت انکار کا اندیشہ ہے،انہوں نے کہا کہ مدارس سے دو ہفتے قبل درخواستیں لینے کے باوجود انہیں کل پرٹرخایاجارہاہیعلماکوکچھریوں میں ذلیل کیا جارہا ہیانہوں نے کہا کہ حکومت  کے ساتھ ہمارے 6مئی اور 17جولائی 2019ء کو ہونے والے مذاکرات میں یہ طے ہوا تھا کہ مدارس کے حوالے سے کوائف طلبی کا اختیار اب صرف وزارت تعلیم کو حاصل ہو گا دوسرا کوئی ادارہ مدارس سے براہ راست کوائف طلب نہیں کرے گا، اس کے باوجود کئی مدارس کو کوائف طلب کرنے کے نام پر ہراساں کیا جا رہا ہے،دینی مدارس کی قیادت کا کہنا تھا کہ چیف آف آرمی سٹاف کی طرف سے مدارس کے معاملات میں دلچسپی کے بعد ہم یہ سمجھے تھے کہ شاید کہ اب حکومت کے رویے میں مثبت تبدیلی آئے گی اور مدارس کے معاملات کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے معاہدوں پر عمل در آمد یقینی بنایا جائے گا مگر افسوس کے جان بوجھ کر طے شدہ امور پر غلط فہمیاں پیدا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

کھالیں 

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...