بوگس بلوں پر مقدمہ‘ ڈاکٹر شاہد بخاری کی اچانک ترقی‘ چہ مگوئیاں شروع

بوگس بلوں پر مقدمہ‘ ڈاکٹر شاہد بخاری کی اچانک ترقی‘ چہ مگوئیاں شروع

ملتان ( وقائع نگار) محکمہ صحت پنجاب کی انوکھی میرٹ پالیسی،اینٹی کرپشن کی جانب سے مقدمہ میں ملوث ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ملتان کی ترقی روک لی،تاہم جنوبی پنجاب کی سب سے (بقیہ نمبر37صفحہ7پر)

بڑی علاج گاہ اور ٹیچنگ ہسپتال نشتر میں بطور ایم ایس تعیناتی کے لئے فائنل امیدواروں میں شامل کر لیا،ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ملتان ڈاکٹر شاہد بخاری پر انکے بطور چلڈرن کمپلیکس تعیناتی کے دوران ادائیگیوں کے بوگس بلز جمع کروانے پر اینٹی کرپشن میں مقدمہ درج ہے،جبکہ ڈاکٹر شاہد بخاری اپنے فیس بک پیج پر غیر اخلاقی ویڈیوز کرنے کے حوالے سے بھی موضوع رہ چکے ہیں تفصیل کے مطابق محکمہ صحت ملتان میں اپنی سستی اور کاہلی کے باعث مشہور ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ملتان ڈاکٹر شاہد بخاری جن پر اینٹی کرپشن میں مقدمہ درج ہونے کے باعث انکی ترقی روک لی گئی تھی اب محکمہ صحت پنجاب نے میرٹ کی دھجیاں اڑاتے ہوئے انہیں جنوبی پنجاب کی سب سے بڑی علاج گاہ نشتر ہسپتال میں بطور ایم ایس تعیناتی کے لئے فائنل کر لیا ہے‘ محکمہ صحت ذرائع کے مطابق وزیر صحت پنجاب کی جانب سے نشتر ہسپتال کے ایم ایس کے طور پر ڈاکٹر شاہد بخاری کا نام فائنل کر لیا گیا ہے،واضح رہے ڈاکٹر شاہد بخاری نے بطور ایم ایس چلڈرن کمپلیکس اپنی تعیناتی کے دوران نہ ہی توسیعی منصوبہ کی جانب کوئی توجہ دی جس کے باعث چلڈرن کمپلیکس کا توسعیی منصوبہ کئی سال التوا کا شکار ہے،تاہم اس دوران ان کی اس نااہلی کے باوجود انہیں ایم ایس کی سیٹ سے ہٹا کر پہلے سی ای او ہیلتھ تعینات کیا گیا اور بعد ازاں ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ملتان تعینات کر دیا گیا،بطور ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ملتان ڈاکٹر شاہد بخاری کی کارکردگی صفر رہی جس پر سابق کمشنر ملتان ڈویزن عمران سکندر بلوچ کی جانب سے کئی مواقعوں پر انکی سخت سرزنش کی گئی جبکہ چند ماہ قبل انہیں باقاعدہ شوکاز بھی جاری کیا گیا تاہم محکمہ میں اپنے اثر ورسوخ کے باعث مشہور ڈاکٹر شاہد بخاری نے سب افسران بالی کو رام کر لیا اسی دوران اینٹی کرپشن کی جانب سے چلڈرن کمپلیکس میں بوگیس بلز کی ادائیگیوں کے حوالے سے انکوائری شروع ہوئی جس میں ڈاکٹر شاہد بخاری کے خلاف مقدمہ بھی درج کیا گیا تاہم کاروائی آگے نہ بڑھ سکی اور اب محکمہ صحت پنجاب نے اپنے اس لاڈلے افسر کو بطور ایم ایس تعینات کرنے کیلئے راہ ہموار کر دی ہے،،،ذرائع کے مطابق ڈاکٹر شاہد بخاری کو اگر بطور ایم ایس نشتر ہسپتال تعینات کر دیا گیا تو انکی سستی کے باعث نشتر جیسے بڑے ہسپتال کے انتظامی امور شدید متاثر ہوں گے جبکہ مریضوں کو علاج کی سہولیات بھی ملنا ناپید ہو سکتی ہیں،ادھر چند روز قبل ڈاکٹر شاہد بخاری کے فیس بک پیج پر غیر اخلاقی ویڈیوز اپ لوڈ ہوئیں جس پر ڈاکٹر شاہد بخاری نے خاموشی اختیار کئے رکھی جبکہ محکمہ صحت ملتان میں اس حوالے سے کافی ڈاکٹر شاہد بخاری موضوع بحث رہے۔

اچانک ترقی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...