والدہ کو قتل کرنے پر بدبخت بیٹے کو سزائے موت ‘ 2 لاکھ جرمانے کا حکم

والدہ کو قتل کرنے پر بدبخت بیٹے کو سزائے موت ‘ 2 لاکھ جرمانے کا حکم

ملتان ( خبر نگار خصو صی) ماڈل کورٹ ملتان کے جج اختر حسین کلیار نے والدہ کو قتل کرنے والے بدبخت ملزم بیٹے کو موت اور جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا ہے ۔ فاضل عدالت میں پولیس(بقیہ نمبر45صفحہ7پر )

تھانہ نیو ملتان کے مطابق ملزم محمد کاشف کے خلاف 5 مئی 2019 کو سگے ماموں محمد انجم نے ہمشیرہ کو قتل کرنےکا مقدمہ کرایا اور موقف اپنایا کہ ملزم کی والدہ رخسانہ کوثر نے بیٹے محمد کاشف سے پوچھا کہ سارا دن کہاں رہے تو ملزم طیش میں آگیا اور والدہ کے سینے پر چھریوں کے وار کردیے،جس کے بعد ملزم سر میں اینٹ مارکر خود بھی بے ہوش ہوگیا تھا، زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ملزم کی والدہ رخسانہ کوثر انتقال کرگئی، ملزم نے میر ی بہن کو قتل کرکے سخت زیادتی کی ہے اس لیے ملزم کو کیفر کردار تک پہنچانے کے لیے کاروائی کی جائے ۔ جس پر ملزم کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا گیا تھا ، تاہم گزشتہ روز سماعت میں فاضل جج نے تمام ثبوتوں اور گواہوں کے بیانات کی روشنی میں ملزم کو جرم ثابت ہونے پر سزائے موت 2 لاکھ روپے معاوضہ اور عدم ادائیگی کی صورت میں مزید 3 ماہ جیل قید کاٹنے کی سزا سنائی ہے ۔

سزائے موت

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...