مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر وکلاء کی ہڑتال،مذمتی قراردادیں منظور،سفارتی محاذ پر بھارت کو شکست دینی ہوگی،مطالبہ

مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر وکلاء کی ہڑتال،مذمتی قراردادیں منظور،سفارتی ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی/نامہ نگار)بھارت کی طرف سے مقبوضہ جموں وکشمیر کی خودمختار حیثیت کے خلاف پنجاب بھر کے وکلاء نے ہڑتال کی،مذمتی قراردادیں منظور کی گئیں اور احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں،ہڑتال کی کال پنجاب بارکونسل کی جانب سے دی گئی،اس سلسلے میں ہونے والے لاہور ہائی کورٹ بار کے اجلاس میں مقبوضہ جموں وکشمیر کی خود مختار حیثیت کے خاتمے کے خلاف منظور کی گئی،مذمتی قرار داد کواقوام متحدہ، عالمی عدالت انصاف اور عالمی فوجداری عدالت میں بھجوانے کافیصلہ بھی کیا گیا،اس سلسلے میں ہونے والے اجلاس عام سے خطاب کرتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ بار کے صدر نے حفیظ الرحمن چودھری اور سیکرٹری بار فیاض احمد رانجھا نے کہا حق خودارادیت کشمیریوں کا حق ہے،عالمی طاقتیں خاموشی توڑیں اور مسئلہ کشمیر کے حل میں اپنا کردار اداکریں،عالمی برادری نے اپنا کردار ادا نہ کیا تو جنوبی ایشیاء اور عالمی امن خطرے میں پڑے گا،قرارداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ مذمتی قرارداد کو عالمی عدالت انصاف، اور عالمی فوجداری عدالت میں بھجوایا جائے گا،اجلاس میں وکلاء نے بڑی تعداد میں شرکت کی،اجلاس میں موجود شرکاء نے مقبوضہ کشمیر کی خود مختار حیثیت کے خاتمے کے خلاف مذمتی قرار داد منظور کرلی، قرار داد میں مزیدکہا گیا ہے کہ پاکستان کشمیر کے مسئلے کو عالمی سطح پراجاگرکرنے کے لئے دنیا بھر میں فوری وفود بھیجے،اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وکلاء راہنماؤں نے کہا کہ پاکستان کشمیر کے معاملے پر ایک قدم پیچھے نہیں ہٹے گا،پاکستان عالمی اور اسلامی ممالک میں کشمیر کے موقف کوپیش کرے،نریندرمودی پاگل پن کا شکار ہے،ایسے پاگل سے نمٹنے کے لئے ہوش مندی کی ضرورت ہے،حکومت کو فوری طور پر سفارتی محاذ پر بھارت کو شکست دینی ہو گی،70 سال کا ظلم، بربریت کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو ختم نہیں کرسکا،بھارت خطے میں سرد جنگ کرنا چاہتا ہے،لاہور بار ایسوسی ایشن کے صدر عاصم چیمہ اور دیگر عہدیداروں نے بھارتی اقدام اور مظالم کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پوری پاکستانی قوم کشمیری بھائیوں کے ساتھ ہے،بھارتی عزائم ناکام ہوں گے اور کشمیریوں کو حق خود ارادیت مل کررہے گا،پنجاب بارکونسل کے وائس چیئرمین شاہ نواز اسماعیل گجر اورممبران کی طرف سے بھی بھارت کی جانب سے جموں کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کی شدیدمذمت کی گئی،ان کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیاہے کہ بھارت کی طرف سے آرٹیکل 370 اور 35 (اے) کاخاتمہ اقوام متحدہ کی قردادوں اور شملہ معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔ 

وکلاء ہڑتال

مزید : صفحہ آخر


loading...