بھارت مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم کا بھیانک باب شروع کر رہا ہے، بشپ ڈاکٹر آزاد مارشل

  بھارت مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم کا بھیانک باب شروع کر رہا ہے، بشپ ڈاکٹر ...

لاہور (پ ر) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور وزیراعظم پاکستان عمران خان کی ثمر بار ملاقات کے دوران امریکی صدر نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کی تھی۔ اس پیشکش کے فوری بعد بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں پرتشدد کارروائیوں میں اضافہ کردیا اور اب ایک صدارتی فرمان کے ذریعے مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی ہے۔ وادی جموں و کشمیر اب ریاست نہیں رہی۔ بھارت کا یہ غاصبانہ اقدام انتہائی قابل مذمت اور امن قائم کرنے والے عالمی اداروں کی فوری توجہ کا متقاضی ہے۔

ان خیالات کا اظہار بشپ ڈاکٹر آزاد مارشل نے اپنے ایک بیان میں کیا ہے۔ بشپ آف رائیونڈ ڈایوسس چرچ آف پاکستان و صدر نیشنل کونسل آف چرچزان پاکستان نے کہا ”کشمیری رہنماؤں کے خدشات بالکل بجا ہیں۔ بھارت کے حالیہ اقدام نے صرف کشمیر ہی نہیں بلکہ پورے برصغیر کے امن کے لئے ایک خطرہ کھڑا کردیا ہے۔ پاکستان کی مسیحی برادری حکومت اور افواج پاکستان کے شانہ بشاہ کھڑی ہے اور ہر اس اقدام کی تائید کرتی ہے جو مسئلہ کشمیر کے پرامن حل کے لئے کیا جائے“۔ بشپ ڈاکٹر آزادمارشل نے عالمی برادری پرزور دیا ہے کہ وہ بھارت کو عقل و شعور سے کام لینے کی ہدایت کرے اور مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی پاس کردہ متفقہ قراردادوں کے تحت سلجھانے کو کہے۔ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور پاکستان اس شہ رگ کی طرف بڑھنے والا ہاتھ کاٹنے کی بھر پور قوت اور ہمیت رکھتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...