پاکستان اور آسٹریا کے مابین تعلیم اور سیاحت کو فروغ دینگے،شاہد سرویا

پاکستان اور آسٹریا کے مابین تعلیم اور سیاحت کو فروغ دینگے،شاہد سرویا

لاہور(پ ر)سینٹر آف ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ اینڈ ڈیپارٹمنٹ آف پیس اینڈکاؤنٹر ٹیرارزم منہاج یونیورسٹی کے تعاون سے ابن خلدون کانفرنس ہال میں، "بین الاقوامی سیاحت کے تعلقات، مواقع، آسٹریا اور پاکستان کی مثال،" کے موضوع پر سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس میں پرو وائس چانسلر منہاج یونیورسٹی لاہور ڈاکٹر محمد شاہد سرویا،آسٹریا کے نامورریسرچ سکالر اور سیاح ڈاکٹر مارکس گوسٹر اور ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ پیس اینڈ کاؤنٹر ٹیرارزم ڈاکٹر خواجہ علقمہ نے شرکت کی۔سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر محمد شاہد سرویا نے کہا کہ سیمینار کا مقصدپاکستان اورآسٹریاکے درمیان تعلیم اور سیاحت کے شعبے میں دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینا ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت کے فروغ کے لئے وسیع مواقع موجود ہیں۔قدرت نے پاکستان کو قدرتی وسائل اور خوبصورت مقامات سے نوازا ہے اگر ہم ان سے مناسب طریقے سے استفادہ کریں تو ہمارے تمام معاشی مسائل حل ہو سکتے ہیں

۔ڈاکٹرخواجہ علقمہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دُنیا میں سیاحت کی صنعت تیزی سے پھیل رہی ہے۔پاکستان سیاحت کے لحاظ سے نہایت ہی منفرد ملک ہے اور یہاں قدرتی مناظر سے لطف اندوز ہونے والوں کے لئے ان گنت مقامات موجود ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ پاکستان میں تہذیبی اور ثقافتی سیاحت کا بھی وسیع دائرہ کار موجود ہے۔ڈاکٹر مارکس گوسٹر نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور آسٹریا کی سیاحت میں بے حد مماثلت ہے۔ جس طرح آسٹریا بلند وبالاپہاڑوں،آبشاروں اور قدرتی حسن سے مالا مال ملک ہے اسی طرح پاکستان کے شمالی علاقہ جات کا قدرتی حسن اپنی مثال آپ ہے۔۔انہوں نے کہا کہ سیاحت سے امن اورثقافت کی حوصلہ افزائی ہوتی ہے جبکہ بین الاقوامی تعلقات میں اضافہ اور اتحاد کو فروغ ملتا ہے۔سیمینار میں مختلف شعبہ جات کے سربراہان،اساتذہ اور طلبہ کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔سیمینار کے اختتام پر پرو وائس چانسلر منہاج یونیورسٹی ڈاکٹر محمد شاہد سرویانے ڈاکٹر مارکس گوسٹر کو شیلڈ سے بھی نوازا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...