کراچی،60ویں لٹریچر فیسٹول کے پہلے دن کا شاندار انعقاد

کراچی،60ویں لٹریچر فیسٹول کے پہلے دن کا شاندار انعقاد

کراچی(اسٹاف رپورٹر)بچوں کے ساٹھویں لٹریچر فیسٹول کے دو روزہ پروگرام میں سے پہلے دن کا انعقاد نہایت کامیابی کے ساتھ عمل میں آیا جس میں بچوں اور بڑوں نے نہایت جوش و خروش سے حصّہ لیا۔فیسٹول کے لئے سجائے گئے تمام پنڈالوں کے نام مشہور ہیروز یا شخصیات کے نام پر رکھے گئے ہیں مثال کے طور پر بھٹ شاہ آڈیٹوریم‘ فہمیدہ ریاض کی بیٹھک‘حمیدہ کھوڑو کی بیٹھک‘باب ہنگول‘جمشید نصیروانجی میٹھا کورٹ یارڈ‘صدیقن کی گلی‘سہیل رعنا آڈیٹوریم‘ انیتا غلام علی آڈیٹوریم‘حکیم سعید کا گہوارہ‘ پروفیسر عبدالسلام لیب اور برنس روڈ کا ڈھابا۔یک وقت کئی سیشنوں سے فیسٹول کاآغاز ہوا جس کی وجہ سے شرکاء کے لئے اس بات کا تعین کرنا مشکل ہوگیا تھا کہ وہ کس سیشن میں شریک ہوں اور کس سیشن کو چھوڑیں اسی وجہ سے بہت سے لوگ سیشن کے دوران ایک سیشن سے دوسرے سیشن کی طرف جاتے ہوئے نظر آئے تاکہ زیادہ سے زیادہ سیشنوں میں حصّہ لے سکیں۔فیسٹول کے پہلے دن بھٹائی آڈیٹوریم میں ایسے بچوں کی بھیڑ نظر آئے جو تھیٹر میں دلچسپی رکھتے تھے۔ یہاں ورکشاپ کا اہتمام دی اسپینسرز تھیڑ کے عاطف بدر کی جانب سے کیا گیا تھا۔تحریک نسواں نے کٹھ پتلی کا تماشہ پیش کرکے خوب داد وصول کی‘یہاں موسیقی‘ شاعری اور ڈرامے کے سیشن بھی منعقد ہوئے۔سہیل رانا آڈیٹوریم میں اوپن مائیک سیشن کے تحت ماہرین‘طلباء کے سوالوں کے جوابات دے رہے تھے۔اس کے بعد خالد انعم کی ہمراہی میں گانے بھی گائے گئے‘بعد ازاں نوجوانوں قوالوں نے قوالی پیش کرکے حاضرین سے خوب داد پائی۔جو بھی افتتاحی پروگرام اس آڈیٹوریم میں منعقد ہورہے تھے اس میں وزیر تعلیم و خواندگی تعلیم‘ ثقافت‘ سیاحت اور نوادرات سید سردار علی شاہ نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔تلاوت کی پرفارمنس کے مظاہر ے کے دوران ہی 2011ء سے اب تک فیسٹول کے لئے غیر معمولی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والوں کو اسپیشل سی ایل ایف آؤٹ اسٹینڈنگ سروس ایوارڈز پیش کئے گئے۔اسی آڈیٹوریم میں فلم اسکریننگ بھی کی گئی جس پر شرمین عبید چنائے اور شہر بانو سید نے اظہار خیال کیا۔حکیم سعید کے کمرے میں سارا دن جو سیشن ہوئے اس میں رومانہ حسین کی ٹام مور کے ساتھ ”سندھ کے بچوں کی تاریخ“کے حوالے سے اسٹوری ٹیلنگ‘ تھیڑ‘ ورکشاپس اور مباحثوں کا سلسلہ جاری رہا جس میں کتاب اور سیکھنے کے جدید طریقوں پر بھی بات کی گئی۔انیتا غلام علی آڈیٹوریم میں کتابوں کی اجرائی تقریبات‘ ایک ڈرامے اور آرکیٹیکٹ مختار حسین کی سربراہی میں کراچی کی تاریخی عمارتوں پر مباحثوں کا سلسلہ جاری تھا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...