کرک یونیورسٹی کی اراضی میں نالوں کی زمین شامل کرنے پر جواب طلب

کرک یونیورسٹی کی اراضی میں نالوں کی زمین شامل کرنے پر جواب طلب

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ نے کرک یونیورسٹی کیلئے خریدی گئی اراضی میں نالوں کی زمین شامل کرنے کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر ڈپٹی کمشنر کرک اور یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب مانگ لیا کیس کی سماعت پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس قیصر رشید اور جسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل دو رکنی بنچ نے کی درخواست گزار کے وکیل زیشان خٹک نے عدالت کو بتایا کہ کہ کرک میں خوشحال خان یونیورسٹی کرک کیلئے 5 سوکنال کی اراضی خریدی گئی ہے یونیورسٹی کے لئے خریدی گئی زمین میں برساتی نالے کی زمین بھی شامل ہے یونیورسٹی کو برساتی نالوں کی زمین میں تعمیر جا رہا ہے انہوں نے عدالت کو بتایا کہ سپریم کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود یونیورسٹی کی تعمیر ہورہی ہے جو توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے عدالت نے ابتدائی دلائل سننے کے بعد ڈی سی کرک اور یونیوسٹی کے وائس چانسلر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...